مصباح الحق کی بطور چیف سلیکٹر مدت ملازمت ختم

فوٹو: ہم نیوز

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق کی بطور چیف سلیکٹر مدت ملازمت ختم ہوگئی تاہم وہ بطور ہیڈ کوچ کام جاری رکھیں گے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ذرائع کے مطابق نئے چیف سلیکٹر کا انتخاب رواں ماہ کے پہلے یا دوسرے ہفتے میں کیے جانے کا امکان ہے۔

ہم نیوز کے ذرائع کے مطابق نئے چیف سلیکٹر کی آمد پر سلیکشن کمیٹی کی پالیسی پر نظرثانی کی جائے گی اور تین ارکان پر مشتمل روایتی سلیکشن کمیٹی بنانے کی تجویز زیر غور آئے گی۔

یہ بھی پڑھیں: مصباح الحق چیف سلیکٹر کے عہدے سے مستعفی

نئےچیف سلیکٹر کے لیے سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد اکرم سمیت دیگر نام زیر غور ہیں۔ جنوبی افریقہ کیخلاف سیریز کیلئےٹیم کاانتخاب نئی سلیکشن کمیٹی کرے گی۔

دو ماہ قبل مصباح الحق قومی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر کے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے۔

ذرائع کے مطابق مصباح الحق پرایک عہدہ چھوڑنے کا دباؤ تھا۔ انہوں نے2019 میں چیف سلیکٹر کاعہدہ سنبھالا تھا۔

پریس کانفرنس کے دوران ان کا کہنا تھا کہ عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ میرا ذاتی ہے اور پی سی بی کو بھی آگاہ کردیا ہے۔

مصباح نے کہا تھا کہ جو بھی آئے گا اس کے ساتھ اچھا کام کریں گے۔ چیف سلیکٹرکی ذمہ داری 30 نومبرتک نبھاؤں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ انٹرنیشنل کرکٹ کے حوالے سے فوکس کرنا ہے۔ مجھے ٹیم کوبہترسے بہتربنانا ہے۔ بطور کوچ میرا ٹارگٹ پاکستان کو ٹاپ تھری سائیڈز میں لانا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو آئی سی سی ایونٹس جیتوانا چاہتا ہوں۔ آن فیلڈ انرجی زیادہ ضروری ہوتی ہے اور میں سمجھتا ہوں آن فیلڈ انرجی مجھ میں ہے اس لیے ہیڈ کوچ کا عہدہ چنا۔ مصباح الحق نے کہا کہ جیت ہار کی ذمہ داری میری ہے۔

گزشتہ سال سری لنکا کیساتھ ٹی20 سیریز اور آسٹریلیا سیریز میں قومی ٹیم کی انتہائی ناقص کارکردگی کے باعث بھی انہیں شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: سرفراز احمد واٹر بوائے کیوں بنے؟مصباح کا جواب

مصباح الحق نے گزشتہ برس چیف سلیکٹر کا عہدہ سنبھالا تھا اور ہیڈ کوچ کے فرائض بھی انجام دیتے رہے۔

ایک وقت میں 2 عہدے رکھنے پرانہیں کرکٹ کے مختلف حلقوں اور شائقین کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔ انگلینڈ ٹورمیں پاکستانی ٹیم کی خراب کارکردگی پر مصباح کی پرفارمنس پر بھی سوال اٹھنے لگے تھے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز