جو پاکستان سے وفادار ہے وہ کبھی اسرائیل کو تسلیم نہیں کرے گا، مولانا فضل الرحمان

کراچی: جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ جو پاکستان سے وفادار ہے وہ کبھی اسرائیل کو تسلیم نہیں کرے گا۔

کراچی میں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے  مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ خطیب مسجد اقصیٰ اور حماس کے سربراہ نے ہمارے اجتماع کو عزت بخشی۔ پاکستانی عوام کسی صورت اسرائیل کوتسلیم نہیں کریں گے۔ خون کے آخری قطرے تک فلسطینیوں کے شانہ بشانہ کھڑے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ جب تک بیت المقدس کوآزادی نہیں ملتی ،پاکستان فلسطینیوں کےساتھ ہے۔ بانی پاکستان نے بھی کہا تھا کہ اسرائیل کو کبھی تسلیم نہیں کریں گے۔ ہم اسرائیل کو تسلیم کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتے ہیں۔

مولانافضل الرحمان نے کہا کہ فارن فنڈنگ کیس بتا رہا ہے کہ عمران خان کو دشمن ملکوں نے پیسہ دیا۔ اسرائیل اور بھارت نے عمران خان کیلئے فنڈنگ میں حصہ ڈالا۔عمران خان نے لندن میں اسرائیلی تنظیم کے حمایت یافتہ زیک گولڈ اسمتھ کیلئے الیکشن مہم چلائی۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے کہا کہ فضل الرحمان کو مولانا کہنا جرم ہے۔ میں کہتا ہوں آپ کو وزیراعظم کہنا جرم ہے۔

مزید پڑھیں: اسرائیل کو تسلیم کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، وزیر خارجہ

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ فروری کو راولپنڈی میں کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا مظاہرہ کریں گے۔ راولپنڈی جلسے میں پی ڈی ایم قیادت شریک ہوگی۔ مدرسے کے طلبہ اپنے حق کو جانتے ہیں اس لیے جلسوں میں شریک ہوتے ہیں۔ مدرسے کا طالب علم بھی اس ملک کا شہری ہے۔

انہوں نے کہا کہ خدانخواستہ پاکستان پر برا وقت آئے تو سب سے آگے مدرسے کے طلبا ہوں گے۔ ٹرمپ غیر سنجیدہ حکمران تھے۔ امریکا کے موجودہ حکمران سنجیدہ بھی ہیں اور جمہوریت پسند بھی ہیں۔ ٹرمپ نے امریکی سفارتخانے کو مقبوضہ بیت المقدس میں کھولنےکا اعلان کیاتھا۔

مولان فضل الرحمان نے کہا کہ جوبائیڈن امریکی سفارتخانے کو بیت المقدس میں کھولنےسے متعلق اعلان کو واپس لیں۔ عالمی قوانین کے مطابق بیت المقدس متنازعہ علاقہ ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز