2021 حکومت کے خاتمے اور الیکشن کا سال ہے، مریم نواز


اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ نواز کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ  استعفے بھی دیں گے، لانگ مارچ بھی ہو گا، کسی کے دباؤ میں نہیں آئیں گے، مناسب وقت کا انتظار کریں گے، حکومت مذاکرات کیلئے اپوزیشن کی منتیں کر رہی ہے، جتنے مرضی رابطے کر لیں حکومت مزید نہیں چل سکتی ہے۔

پارلیمنٹ ہاؤس میں پاکستان مسلم لیگ ن کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ 2021 الیکشن کا سال ہے ، یہ سال سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے کا سال ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ  نااہل حکومت کی وجہ سے ملک مسائل کا شکار ہے، عوام کو معلوم ہے کہ حکومت ملک کو یہاں تک لانے کی مجرم ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ لانگ مارچ ہوگا اور ستعفے بھی آئیں گے۔ موجودہ حکومت کی وجہ سےعوام کی مشکلات میں اضافہ ہوا ہے۔ خوشی ہے کہ آج مسلم لیگ ن نواز شریف کے ساتھ کھڑی ہے۔ جبر اور  زیادتیوں کے باوجوداراکین اجلاس میں شریک ہوئے۔ ہماری پارٹی  نواز شریف  کے بیانیے کے ساتھ کھڑی ہے۔

پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ (پی ڈی ایم) میں اختلافات سے متعلق حکومتی دعوؤں سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہرخواہش پر دم نکلے، پی ڈی ایم سے متعلق ان کی خواہش ہوسکتی ہے۔ سینیٹ انتخابات جب نزدیک آئیں گے تو اس کی حکمت عملی بنے گی۔ حکمران ہر طریقہ آزما چکے ہیں، وہ ن لیگ اور پی ڈی ایم کو توڑ نہیں  سکے۔

مزید پڑھیں: مہنگائی کا طوفان حکومتی کارکردگی کا گواہ ہے، مریم نواز

مریم نواز نے کہا کہ جن قوتوں کو ہم سیاست اور سیاسی میدان سے نکالنا چاہتے ہیں وہ دور رہیں گے۔ پی ڈی ایم میں حکمت عملی طے ہوگی۔

پاکستان پیپلز پارٹی کی بیک ڈورڈپلومیسی کے سوال پر مریم نواز نے کہا کہ میں مفروضوں پر بات نہیں کرسکتی۔ میاں نواز شریف کا بیانیہ ملکی ترقی کا بیانیہ ہے۔  نواز شریف کا حکم ہے کہ حکومت کی نااہلی سےعوام کو آگاہ کریں۔

انہوں نے کہا کہ نیا نیب آرڈینیس نہیں لانے دیں گے۔ جو نیب اپوزیشن کیلئے تھا اب حکمرانوں کیلئے بھی وہی رہے گا۔

حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کے سوال پر مریم نواز نے کہا کہ اس پر بات کی ہے کہ اس معاملے کو پی ڈی ایم میں لائیں گے۔

ن لیگ کے پارلیمانی پارٹی اجلاس کے دوران شہباز شریف اورخواجہ آصف کی تصاویر رکھ دی گئی تھیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز