سینیٹ الیکشن: پرویز رشید کے کاغذات مسترد کرنے پر جواب طلب

سینیٹ انتخابات: پرویز رشید کا کاغذات مسترد کیے جانے کا اقدام چیلنج

فوٹو: فائل

الیکشن ٹربیونل نے مسلم لیگ ن کے رہنما پرویز رشید کی کاغذات نامزدگی مسترد کرنے پر پنجاب ہاؤس سے جواب طلب کر لیا ہے۔

کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کیخلاف پرویز رشید نے درخواست دائر کی تھی جس کو سماعت کیلئے منظور کر لیا گیا ہے۔

لاہور ہائیکورٹ کے الیکشن ٹریبونل نے پنجاب ہاؤس کے ذمہ دار افسر کو کل ریکارڈ سمیت طلب کیا ہے اور الیکشن کمیشن کو بھی نوٹس بھیجا گیا ہے۔

پرویز رشید کی طرف سے وکیل احسن بھون اور اعظم نذیر تارڑ ٹربیونل کے سامنے پیش ہوئے اور مؤقف اپنایا کہ ریٹرننگ افسر نےسینیٹ انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی نادہندہ ہونےکی بنیاد پر مستردکیے، ریٹرننگ افسر کے فیصلے میں 96 لاکھ روپے کا نادہندہ ہوناجواز بنایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:سینیٹ انتخابات: پرویز رشید کے کاغذات نامزدگی مسترد

اس موقع پر پرویز رشید نے مؤقف اپنایا کہ پنجاب ہاؤس سے 2019 میں واجب الادا رقم کا کوئی نوٹس بھی نہیں ملاتھا جب کہ واجب الادا رقم کی ادائیگی کے لیے ریٹرننگ افسر کو درخواست دی مگر مسترد کردی گئی، ریٹرننگ افسرکوکراس چیک سے رقم ادائیگی کی بھی یقین دہانی کرائی مگرمؤقف تسلیم نہیں کیا گیا۔

پرویز رشید نے استدعا کی کہ پنجاب ہاؤس کی واجب الادا رقم جمع کرانے اور ریٹرننگ افسر کو درخواستگزار کے کاغذات نامزدگی منظور کرنےکاحکم دیاجائے۔

کاغذات نامزدگی مسترد ہونے پر ن لیگی رہنما نے کہا تھا کہ میری نامزدگی مسترد کرنے کا طریقہ انجینئرڈ ہے اور اب انجینئرڈ ڈیفالٹ کے ذریعے انتخاب سے روکنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز