آیت اللہ خامنہ ای کا یورینیم کی افزودگی 60 فیصد تک بڑھانے کا عندیہ

آیت اللہ خامنہ ای کا یورینیم کی افزودگی 60 فیصد تک بڑھانے کا عندیہ

 ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے یورینیم کی افزودگی 60 فیصد تک بڑھانے کا عندیہ دے دیا۔

عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز نے ایرانی سرکاری ٹی وی کے حوالے سے بتایا ہے کہ آیت اللہ خامنہ ای نے کہا ہے کہ ایران جوہری کام کے حوالے سے امریکی دباؤ کسی صورت قبول نہیں کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ ایران کی یورینیم افزودگی کو 20 فیصد تک محدود نہیں رکھا جائے گا بلکہ ہم اس کو اس سطح پر لے جائیں گے جۃاں تک ہمیں اس کی ضرورت ہوگی۔ ہم اس کو 60 فیصد تک بھی لے جاسکتے ہیں اور ایسا کرنے سے کوئی ہمیں نہیں روک سکتا۔

ایرانی سپریم لیڈر کا مزید کہنا ہے کہ ایران نے کبھی بھی جوہری ہتھیار حاصل کرنے کی کوشش نہیں کی تاہم تہران جوہری ہتھیار حاصل کرنا چاہے تو کوئی بھی اسے نہیں روک سکتا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل ایران کے سپریم لیڈر آیت اللّٰہ خامنہ ای نے کہا تھا کہ امریکہ ایران سے جوہری معاہدے کی دوبارہ پاسداری چاہتا ہے تو اسے ایران پر عائد پابندیاں عملی طور پر ختم کرنا ہوں گی۔

مزید پڑھیں: امریکہ کا جوہری معاہدہ سے نکلنے کا اعلان، ایران پر نئی پابندیاں عائد

ہم نیوز کے مطابق ایرانی ایئر فورس کمانڈرز سے خطاب میں آیت اللّٰہ خامنہ ای کا کہنا تھا کہ امریکہ کے پابندیاں ختم کرنے تک ایران جوہری معاہدے پر دوبارہ عمل پیرا نہیں ہوگا

انہوں ںے واضح طور پر کہا کہ امریکہ کو لفظی نہیں عملی لحاظ سے ایران پرعائد پابندیاں مکمل طور پہ ختم کرنا ہوں گی۔

آیت اللّٰہ خامنہ ای کا کہنا تھا کہ ایران کی جوہری معاہدے کی پاسداری پر واپسی امریکی پابندیوں کے خاتمے سے ہی ممکن ہے۔

مزید پڑھیں: ایران کا صدر ٹرمپ کی گرفتاری کیلئے انٹرپول سے دوبارہ رجوع

امریکہ کے نو منتخب صدر جوبائیڈن نے گزشتہ روز اپنے ایک انٹرویو میں واضح طور پر کہا ہے کہ ایران کو مذاکرات کی میز تک لانے کے لیے اس پر عائد معاشی پابندیاں ختم نہیں کی جا سکتی ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز