کانگو: اقوام متحدہ کے قافلے پر مسلح حملہ، اٹلی کے سفیر جاں بحق

کانگو: افریقہ کے ملک کانگو میں مسلح افراد نے اقوام متحدہ کے قافلے پر حملہ کرکے اٹلی کے سفیر اور پولیس افسر سمیت ڈرائیور کو ہلاک کردیا ہے۔

یو این کی گاڑیوں پر بھارتی فائرنگ، پاکستان نے اقوام متحدہ میں معاملہ اٹھا دیا

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اقوام متحدہ کی ایجنسی اور شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ قافلہ گوما سے کانگو کے مشرقی شہر رتشورو میں واقع عالمی خوراک پروگرام اسکول منصوبے کے دورے پر جارہا تھا۔

ورلڈ فوڈ پروگرام (ڈبلیو ایف پی) نے اس ضمن میں بتایا ہے کہ حملہ اس سڑک پر کیا گیا جسے سیکیورٹی انتظامات کے بغیر سفر کے لیے کلیئر کیا گیا تھا۔ اس حوالے سے مزید معلومات لی جا رہی ہیں۔

اٹلی کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ حملے میں کونگو میں 2017 سے اطالوی سفیر لوکا اتاناسیو، کارابنیری افسر وِٹوریو لاکوواکی اور ان کے ڈرائیور ہلاک ہوئے ہیں۔

وزیراعظم نےکورونا سے نمٹنےکیلئے10نکاتی ایجنڈا اقوام متحدہ میں پیش کردیا

خبر رساں ایجنسی کے مطابق ڈبلیو ایف پی کا کہنا ہے کہ حملے میں قافلے کے دیگر زخمی ہونے والے اراکین کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے بتایا گیا ہے کہ شمالی کیوو کے گورنر کارلی نانزا نے بتایا ہے کہ مسلح افراد نے اقوام متحدہ کی گاڑیوں کو اغوا کیا اور انہیں قریبی جھاڑیوں میں لے گئے۔

ابتدائی اطلاعات کلے مطابق اطالوی سفیر کو شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں وہ جانبر نہ ہو سکے۔

ایل او سی: بھارتی فوج کی اقوام متحدہ مبصرین کی گاڑی پر فائرنگ

کونگو کے مشرقی حصے کو باغیوں کا گڑھ سمجھا جاتا ہے۔ باغی بنیادی طور پر معدنیات سے مالامال وسطی افریقی ملک پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز