ن لیگی رہنما پرویز رشید سینیٹ الیکشن کیلئے نا اہل قرار

لاہور: ہائی کورٹ کے الیکشن ٹربیونل نے  ن لیگی رہنما پرویز رشید کو سینیٹ الیکشن کیلئے نا اہل قرار دے دیا ہے۔

الیکشن کمیشن نے پرویز رشید کے سینیٹ انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی مسترد کیے تھے۔

وکیل رانا مدثر نے اعتراض اٹھایا تھا کہ رہنما مسلم لیگ (ن) پنجاب ہاؤس کے 95 لاکھ روپے کے نادہندہ ہیں۔ الیکشن کمیشن نے اپنے حکم میں کہا کہ پرویز رشید اپنے کاغذات نامزدگی میں پنجاب ہاؤس کے واجبات کے ثبوت دینے میں ناکام رہے۔

یہ بھی پڑھیں:سینیٹ انتخابات کیلئے پرویز رشید کے کاغذات نامزدگی مسترد

ن لیگی رہنما نے الیکشن کمیشن کا اقدام ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ الیکشن کمیشن سمیت دیگر فریقین نے ریکارڈ لاہو رہائی کورٹ میں جمع کرایا۔

وکیل خالد اسحاق نے مؤقف اپنایا کہ پرویز رشید کے بقایا جات سے متعلق نوٹس یا اطلاع نہیں ملی۔

عدالت نے ریمارکس دیے اگر نوٹس پر صرف پرویز رشید بھی لکھ دیں تو انکو پہنچ جائے گا۔

وکیل نے کہا کہ قانون کے مطابق اگر امیدورا کے علم میں کوئی یوٹیلیٹی بل وغیرہ نہیں تو وہ ادا کر سکتا ہے۔ پنجاب ہاوَس کے کنٹرولر عدالت میں موجود ہے کیش بھی دینے کےلیے تیار ہیں۔ اگر یہ کیش میں لینا چاہتے ہیں تو ہم ایک گھنٹے کے وقفے تک کیش دے دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:فیصل واوڈا سینیٹ الیکشن کیلئے اہل قرار

ہائی کورٹ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد پرویزرشید کی اپیل مسترد کر دی اور الیکشن کمیشن کے فیصلے کو درست قرار دیا۔

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ن لیگی رہنما نے کہا مجھے بےبنیاد الزام پر نا اہل کیا گیا۔ سرکاری کاغذات پر مجھے نادہندہ ظاہر کیا گیا۔

پرویز رشید کا کہنا تھا کہ سینیٹ رکن بنوں یا نہیں ان کو بےنقاب کرتارہوں گا۔ فیصلے کیخلاف سپریم میں درخواست دائر ہے جب تک سپریم کورٹ فیصلہ نہیں کرتی وہ پیسے میری ذمہ داری نہیں بنتے۔

ان کا کہنا تھا کہ دھندوالوں اور انصاف والوں کی طرف سے رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں۔ جہاں موقع ملے گا اس دھند اور اندھیرنگری کو بے نقاب کرتا رہوں گا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز