سیف اللہ آبڑو کو 35 کروڑ میں سینیٹ کا ٹکٹ دیاگیا، لیاقت جتوئی کا الزام

لیاقت جتوئی کو اظہار وجوہ کا نوٹس، 7 روز میں وضاحت طلب

سابق وزیر اعلیٰ سندھ اور پاکستان تحریک انصاف  کے سینئر رہنما لیاقت جتوئی نے الزام لگایا ہے کہ حال ہی میں پارٹی میں شامل ہونے والے سیف اللہ ابڑو کو 35 کروڑ روپے کے عوض سینیٹ کا ٹکٹ دیا گیا۔

دادو میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے لیاقت جتوئی نے کہا کہ پارلیمانی بورڈ کا اجلاس خفیہ رکھا گیا جس میں من پسند افراد کو شامل کیا گیا۔ 4 لوگوں نے بیٹھ  کر اپنے من پسند افراد کو سینیٹ ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا۔

مزید پڑھیں: پی ایس-86 پہ ہونے والے ضمنی انتخاب میں وزیراعلیٰ اثر انداز ہوئے، لیاقت جتوئی

پی ٹی آئی رہنما لیاقت جتوئی نے کہا کہ سیف اللہ ابڑو کو پارٹی میں آئے ہوئے 6 روز ہوئے ہیں۔ سیف اللہ ابڑو کو کس بنیاد پر سینیٹ کا ٹکٹ دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے پرانے ورکرز انتظار کرتے رہے اور چھ  روز قبل پارٹی میں شامل ہونے والوں کو ٹکٹ دے دیا گیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز