سپریم کورٹ کا وکلا سے فٹبال گراؤنڈ خالی کرانے کا حکم

سپریم کورٹ نے وکلا چیمبرز سے متعلق اسلام آباد بار کی درخواست خارج کرتے ہوئے فٹ بال گراؤنڈ کو فوری طور پر وکلا سے خالی کرانے کا حکم دیا ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں: سپریم کورٹ نے انتظامیہ کو وکلا کے چیمبرز گرانے سے روک دیا

اسلام آباد بار کی درخواست پر چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔ عدالت نے تمام غیرقانونی چیمبرز کوگرانے کرنے کا حکم دے دیا۔

اس سے قبل اسلام آباد ہائی کورٹ نے دارالحکومت کے سیکٹر ایف-8 میں موجود فٹ بال گراؤنڈ پر وکلا کی جانب سے کی گئی تمام غیر قانونی تعمیرات ختم کرنے اور گراؤنڈ کو بحال کرنے کے بعد وہاں فٹ بال ٹورنامنٹ منعقد کرنے کی ہدایت کی تھی۔

اسلام آباد کی رہائشی شہناز بٹ نے اسلام آباد بار ایسوسی ایشن کے خلاف درخواست دائر کی تھی جس پر ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے فیصلہ سنایا تھا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ اسلام آباد ڈسٹرک بار کی جانب سے بغیر قانونی اختیار اور دائرہ کار کے کھیل کے میدان میں دیگر مقامات پر مطلوبہ الاٹمنٹس کی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں: وکلا کی ہنگامہ آرائی: اسلام آباد ہائیکورٹ اور کچہری تاحکم ثانی بند

فیصلے میں یہ بھی کہا گیا کہ ان غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث عہدیداروں کو بے نقاب کرنے کے علاوہ ان کے خلاف تادیبی کارروائی کی جائے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکم نامے میں قرار دیا تھا کہ اسلام آباد ڈسٹرک بار کی جانب سے کھیل کے میدان میں کی گئی الاٹمنٹس غیر قانونی، غلط اور کسی دائرہ اختیار کے بغیر تھیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز