گوگل کا تاریخ کی سب سے بڑی تبدیلی کا فیصلہ

گوگل کا تاریخ کی سب سے بڑی تبدیلی کا فیصلہ

فائل فوٹو

دنیا کے مقبول ترین سرچ انجن گوگل نے فیصلہ کیا ہے کہ  کسی صارف کی ویب براؤزنگ ہسٹری کی بنیاد پر اشتہارات کی فروخت روک دیا جائے گا۔

کمپنی نے مستبل میں اپنی تمام تر مصنوعات میں صارفین کے ڈیٹا کو ٹریک کرنے والے ٹولز تیار نہ کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔

گوگل کے اس اقدام سے ویب سائٹس اور اشتہاری کمپنیوں کیلئے صارفین کی ڈیٹا ٹریکنگ ناممکن ہوجائے گی۔ ایسا کرنے سے ویب براؤزنگ میں اشتہارات کا کاروبار بالکل بدل جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:گوگل کے متبادل نئے سرچ انجن کی تیاری شروع

خیال رہے کہ گوگل کی زیادہ تر آمدن براؤزنگ ڈیٹا پر مبنی ہے۔

گوگل کے ایڈ پرائیویسی اینڈ ٹرسٹ ٹیم کے پراڈکٹ منیجمنٹ ڈائریکٹر ڈیوڈ ٹیمکن کے مطابق پرائیویسی کو تحفظ فراہم کرنے والے اے پی آئیز جیسے فیڈریٹڈ لرننگ آف کوہورٹس اے پی آئی (ایف ایل او سی) کے استعمال کی منصوبہ بندی کی جارہی ہے جن کو متعلقہ اشتہارات کی فراہمی کے لیے بھی استعمال کیا جائے گا۔

اس حل کے لیے صافین کے گروپس پر انحصار کیا جائے گا جن کی ترجیحات ملتی جلتی ہوں گی۔

گوگل کا منصوبہ ہے کہ مارچ میں کروم بعاؤزر پر ایف ایل او سی پر مبنی اے آئی پیز کی آزمائش کی جائے اور بعد ازاں  گوگل ایڈز پر بھی کیا جائے گا۔ کروم صارفین کو بھی نئے پرائیویسی کنٹرولز تک رسائی اپریل میں مل سکے گی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز