ایران کے ایٹمی پلانٹ پر اسرائیل کا سائبر حملہ، تہران کا بدلہ لینے کا اعلان

ایران کے ایٹمی پلانٹ پر اسرائیل کا حملہ، تہران کا بدلہ لینے کا اعلان

اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد نے ایران کے شہر نطنز  میں واقع ایٹمی پلانٹ کو سائبر حملے کا نشانہ بنایا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی  نے اسرائیلی میڈیا کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ ایک سائبر حملہ تھا جو اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد نے کیا ہے۔ حملے کے نتیجے میں ایٹمی تنصیب کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ اس حملے کے بعد نطنز میں بجلی منقطع ہوگئی تھی۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک زیرزمین جوہری سائٹ پر حملے کا “بدلہ لے گا”، جس کے لیے ایران نے اسرائیل کو مورد الزام ٹھہرایا ہے۔

ایرانی عہدیداروں نے بتایا کہ اتوار کے روز اسرائیل کی جانب سے نطنز میں واقع یورینیم کی افزودگی پلانٹ کو “ایٹمی دہشت گردی” کا نشانہ بنایا گیا۔ ایران کے مطابق اس جوہری پلانٹ کو اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد نے سائبر حملے کا نشانہ بنایا ہے۔

اسرائیلی میڈیا نے بتایا ہے کہ یہ ایک سائبر حملہ تھا جو موساد نے کیا ہے جس کے نتیجے میں تنصیب کو ٹھیک ٹھاک نقصان پہنچا ہے۔ اس حملے کے بعد نطنز میں بجلی منقطع ہوگئی تھی۔

مزید پڑھیں: ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے ہر قیمت پر روکیں گے، اسرائیلی وزیر اعظم

ایران کے جوہری توانائی ادارے کے سربراہ علی اکبر صالحی نے اسے ایٹمی دہشت گردی قرار دیا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے واقعے کی ذمہ داری اسرائیل پر عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس کا بدلہ لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایران نے عالمی پابندیوں کے خاتمے میں کامیابیاں حاصل کی ہیں جس کا اسرائیل بدلہ لینا چاہتا ہے۔

ایرانی محکمہ ایٹمی توانائی کے ترجمان بہروز کمالوندی نے اپنے بیان میں کہا کہ واقعے میں جوہری تنصیب کا کوئی اہلکار زخمی نہیں ہوا اور نہ ہی پلانٹ کو نقصان پہنچا۔ انہوں نے یورینیئم کے پھیلنے کو بھی خارج از امکان قرار دیا۔

ایک روز قبل ہی ایران نے اس جوہری تنصیب میں 164 آئی آر-6 سینٹری فیوجز کا باقاعدہ افتتاح اور نئی یورینیئم افزودگی آئی آر-9 کا عمل شروع کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز