پیپلزپارٹی غلطی کا اعتراف کرے پھر اعتماد بحال ہو گا، شاہد خاقان عباسی

مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی غلطی کا اعتراف کرے پھر اعتماد بحال ہو گا۔

ہم نیوز کے پروگرام پاکستان ٹونائٹ میں میزبان ثمر عباس کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم نے پیپلز پارٹی کے عہدیداروں کے استعفوں پر فیصلہ موخر کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے واٹس ایپ گروپ سے پیپلز پارٹی کو استعفوں کی وجہ سے نکالا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کیلئے کوئی شرائط نہیں ہیں بس وہ اعتماد بحال کریں۔

مولانا فضل الرحمان ن لیگ اور پیپلز پارٹی کے معاملات سے لاتعلق ہوگئے

انہوں نے مزید کہا کہ پی ڈی ایم اتحاد کا مقصد ایک دوسرے پر بیان بازی کرنا نہیں تھا۔

اس سے پہلے پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما راجہ پرویز اشرف نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کو معاملات پہلے سلجھانا چاہیے تھے،ان کے بیان سے معاملات مزید خراب ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ جان بوجھ کر پی ڈی ایم کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے، اتحاد میں مہلت نہیں دی جاتی۔ پیپلزپارٹی نے اس اتحاد کیلئے بہت زیادہ محنت کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ 35 سال کا لیڈر70 سال کے لیڈر سے بہتر ثابت ہوا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کیلئے کوئی تحریری معاہدہ نہیں ہوا تھا، ن لیگ کے پاس اپوزیشن لیڈر اور چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے عہدے ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز