کورونا کے وار: امیر بھارتیوں نے ملک سے بھاگنا شروع کردیا

کورونا کے وار: امیر بھارتیوں نے ملک سے بھاگنا شروع کردیا

نئی دہلی: عالمی وبا قرار دیے جانے والے کورونا وائرس میں خطرناک اضافے کے بعد بھارتیوں کی بڑی تعداد میں ملک سے باہر نکلنے کی دوڑ شروع ہو گئی ہے۔

کراچی: عوام نے کورونا ایس او پیز کو ہی قرنطینہ کرادیا؟

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اس دوڑ میں چونکہ امیر افراد شامل ہیں اس لیے جہاں ایک جانب فضائی کرایوں میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے تو وہیں دوسری جانب پرائیوٹ جہازوں کے کرایوں میں بھی ہوشربا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

متحدہ عرب امارات نے بھارت سے آنے والی پروازوں پر پابندی کا اعلان کیا ہے جس کا اطلاق 25 اپریل سے ہوگا۔

خبر رساں ادارے کے مطابق متحدہ عرب امارات کے لیے انڈین پروازوں پر پابندی کے اطلاق سے قبل کورونا سے خوفزدہ بھارتی شہری ملک سے نکلنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

بھارت میں کورونا وائرس کی صورتحال بے قابو ہونے کے بعد ملک سے امارات جانے والی پروازوں پر اتوار کے روز سے پابندی عائد کر دی جائے گی۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق جمعہ اور ہفتہ کو ممبئی سے دبئی جانے والی پروازوں کا یک طرفہ کرایہ ایک ہزار ڈالر تک پہنچ گیا ہے جو عام قیمت سے دس گنا زائد ہے جب کہ دہلی سے دبئی جانے والی پرواز کا کرایہ 50 ہزار بھارتی روپوں سے زیادہ ہے جو عام قیمت سے پانچ گنا ہے۔

کورونا کی بگڑتی صورتحال کے پیش نظر شہروں میں فوج طلب کی گئی ،فواد چودھری

عالمی ایجنسی کے مطابق اتوار کے لیے کوئی ایئر لائن ٹکٹ فراہم نہیں کر رہی ہے۔ اس دن سے فلائٹ آپریشن دس دن کے لیے معطل کر دیے جائیں گے۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق اس صورتحال میں پرائیویٹ جیٹ میں لوگوں کی دلچسپی حد سے زیادہ بڑھ گئی ہے۔

ایئر چارٹر سروس انڈیا کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ان کی چارٹر سروس کی سنیچر کو 12 پروازیں دبئی جا رہی ہیں جس میں تمام سیٹیں بک ہوئی ہیں۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق ایک اور چارٹر کمپنی اینتھرال ایوی ایشن کے ترجمان نے بتایا ہے کہ طلب کو پوار کرنے کے لیے مزید جہازوں کی درخواست کی گئی ہے۔

دنیا میں کورونا کیسز کی تعداد14کروڑ53ہزار سے بڑھ گئی

ترجمان کے مطابق ممبئی سے دبئی جانے کے لیے 13 سیٹوں پر مشتمل جیٹ کی قیمت 38 ہزار ڈالر ہے جب کہ چھ سیٹوں پر مشتمل جہاز کا کرایہ 31 ہزار ڈالر ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق عام دنوں میں بھارت سے متحدہ عرب امارات کے لیے 300 کمرشل پروازیں ہفتہ وار چلائی جاتی ہیں۔

عرب امارات میں تقریباً 30 لاکھ سے زیادہ بھارتی رہتے ہیں جو وہاں کی آبادی کا ایک تہائی حصہ ہیں اور ان میں سے اکثر دبئی میں رہائش پذیر ہیں۔

کورونا کیسز میں ریکارڈ اضافے کے بعد دارالحکومت دہلی اور ملک کے دیگر علاقوں کے قبرستانوں اور شمشان گھاٹوں میں جگہ کم پڑ رہی ہے جس کے بعد اجتماعی تدفین اور چتائیں جلانے کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔

اسلام آباد:سب سے بڑا اسپتال پمز کورونا مریضوں سے بھر گیا

بھارتی اسپتالوں میں کورونا کے مریضوں کے لیے جگہ نہیں ہے اور ادویات و آکسیجن کی بھی قلت کا سامنا ہے۔

متعلقہ خبریں