توشہ خانہ کیس، کون سا تحفہ کس نے، کتنے میں خریدا ؟

توشہ خانہ کیس، کون سا تحفہ کس نے کتنے میں خریدا ؟

لاہور: توشہ خانہ کیس میں کون سا بیش قیمت تحفہ کس نے اور کتنے میں خریدا ؟ تفصیلات سامنے آ گئیں۔

لاہور ہائی کورٹ میں توشہ خانہ کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت میں 19-2018 کی رپورٹ جمع کرا دی گئی۔

رپورٹ کے مطابق 90 بیوروکریٹس نے سربراہان مملکت کو ملنے والے تحائف خریدے۔ ایوان صدر کے پروٹوکول افسر محمد سعید نے متعدد اشیا خریدیں۔

کابینہ ڈویژن کے نجیب اللہ نے 600 روپے میں مجسمہ خریدا اور غلام محمد نے صرف 3500 میں کارپٹ خریدا۔ تحائف کی مد میں خزانے میں 2 کروڑ 72 لاکھ 90 ہزار روپے آئے۔

سیکرٹری ایوان صدر نے ماربل ڈیکوریشن پیس 2 ہزار روپے میں خریدا جبکہ اسسٹنٹ سیکرٹری پروٹوکول ایوان صدر نے 3 ہزار روپے میں نایاب فلائی کاٹ ان امبر کا گفٹ خریدا۔ 20 ہزار 560 روپے میں دیوار پر سجاوٹ کی تصویر خریدی گئی۔

اس کے علاوہ 2 ہزار 400 روپے میں ایک لیمپ اور 45 ہزار 500 روپے میں قیمتی تحائف کا باکس خریدا گیا۔ باکس میں امپورٹڈ پروفیوم سیٹ، لوبان دان سگریٹ لائیٹر اور نایاب خوشبو شامل تھیں۔

سعید خان نے 9 ہزار 500 روپے میں 2 ڈیکوریشن پیس اور 3 ہزار 250 روپے میں ایک خنجرخریدا جبکہ محمد بلال ظفر نے 3 ہزار روپے میں ٹیبل کلاتھ خریدا۔

اسسٹنٹ کیبنٹ ڈویژن رضوان احمد نے 4 ہزارروپے میں خنجرخریدا۔  سیکرٹری پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ شعیب احمد صدیقی نے بیلا کٹورا 2 ہزار روپے میں خریدا۔ سیکرٹری شماریات ڈویژن رخسانہ یاسمین نے 2 کارپٹ 22 ہزار اور 25 ہزار روپے میں خریدے۔ ایس او کیبنٹ ڈویژن نجیب اللہ نے 600 روپے میں دوستی کی علامت کا مجسمہ خریدا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز