طالبان کو ثابت کرنا ہوگا کہ وہ گورننس اور امن کے اہل ہیں، شاہ محمود قریشی


وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ طالبان کو ثابت کرنا ہوگا کہ وہ گورننس اور امن کے اہل ہیں، طالبان کو اگر بین الاقوامی برادری میں اپنی جگہ بنانی ہے تو انہیں امن ثابت کرنا ہو گا۔

ہم نیوز کے پروگرام ’  ہم مہر بخاری کے ساتھ ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ طالبان کو دوسرے فریق میں یکسوئی نہیں دکھائی دے گی تو وہ تو کہیں گے کہ کس سے بات کریں؟

انہوں نے کہا کہ مذاکرات کا عمل جاری ہے اور افغان وزیر داخلہ، وزیر دفاع کو تبدیل کردیا گیا۔ طالبان بھی افغان ہیں، تمام فریقین نے فیصلہ کرنا ہے کہ کس طرح کا افغانستان چاہیے۔

طالبان کی بڑی فتح: تاجکستان کے ساتھ مرکزی سرحدی گزرگاہ پر قبضہ کر لیا

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اس خطےکا اہم ترین ملک ہے، طالبان امریکہ امن معاہدے میں پاکستان کا اہم کردار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان کے حوالے سے پاکستان کا کردار تعمیری تھا اور آئندہ بھی رہے گا، اگر افغانستان میں حالات خراب ہوتے ہیں تو پاکستان متاثر ہو گا۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ پاک امریکہ آفیشل لیول پربات چیت ہوتی رہتی ہےلیکن بہتری کی گنجائش ہے، لنزے گراہم یا دیگر لوگوں کو یہ سوال پوچھنا چاہیے کہ پاکستان کو کیوں نظرانداز کیا جا رہا ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی سے متعلق انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو بچہ ہے، سیکھے گا اسے سمجھ آجائے گی، بلاول لکھی ہوئی تقریر پڑھتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز