جمال خاشقجی کے قاتلوں نے امریکا میں فوجی تربیت حاصل کی تھی، امریکی اخبار کا دعویٰ

جمال خاشقجی قتل کیس: عدالت نے آٹھ ملزمان کو سزا سنادی

فوٹو: فائل

امریکی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قاتلوں نےامریکا میں فوجی تربیت حاصل کی تھی۔

نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث 4 سعودی شہریوں نے امریکی محکمہ خارجہ کی منظوری پانے والے معاہدے کے تحت قتل سے ایک سال قبل پیرا ملٹری ٹریننگ حاصل کی۔

اخبار کے مطابق دفاعی نوعیت کی یہ تربیت سعودی رہنماؤں کی حفاظت کیلئے تھی۔

اخبار کا کہنا تھا کہ کیا امریکی حکام اس آپریشن سے آگاہ تھے؟ اس سلسلے میں کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔

جمال خاشقجی کے قتل کی منظوری محمد بن سلمان نے دی، امریکی خفیہ رپورٹ

اس رپورٹ پر امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا کہ میڈیا رپورٹنگ میں کسی دفاعی برآمدی لائسنسنگ سرگرمی پر الزام پر قانون کے تحت محکمہ کوئی تبصرہ نہیں کر سکتا۔

سعودی صحافی جمال خاشقجی کی منگیتر کا سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان پر مقدمہ

سعودی صحافی جمال خاشقجی  کو 2018 میں ترکی میں سعودی سفارت خانے میں قتل کردیا گیا تھا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق صحافی کی لاش کے ٹکڑے سعودی قونصل جنرل کے گھر کے باغ میں دفن کیے گئے تھے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جمال خاشقجی کا جسم کئی ٹکڑوں میں تقسیم کیا گیا تھا اور ان کا چہرہ مسخ کر دیا گیا تھا۔

واضح رہے سعودی صحافی خا شقجی دو اکتوبر 2018 کو استنبول میں سعودی قونصل خانہ میں داخل ہونے کے بعد لاپتہ ہوگئے تھے۔ ان کی گمشدگی کے کچھ دن بعد ترکی کا موقف سامنے آیا تھا کہ خاشقجی کو قتل کیا جاچکا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز