ہفتے میں 4 دن کام اور 3 چھٹیاں

واشنگٹن: امریکہ میں بھی ہفتے میں 4 دن کام اور 3 دن چھٹیوں کے لیے کانگریس میں مسودہ جمع کرا دیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق کیلیفورنیا سے ڈیموکریٹ رکن مارک ٹکانو نے امریکی کانگریس میں قانون کا مسودہ جمع کرا دیا جس میں ہفتے میں چار دن کام اور تین دن چھٹیاں سے متعلق لکھا گیا ہے۔

جمع کرائے گئے مسودے میں مارک ٹکانو نے مختلف ممالک میں ہفتے میں تین دن چھٹیوں کے تجربات کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ ہفتے میں چار دن یعنی 32 گھنٹے کام سے ملازمین کی صحت بہتر رہتی ہے اور اپنے اہلخانہ کے ساتھ زیادہ وقت گزار کر انہیں خوشی حاصل ہو گی جس سے کارکردگی میں نمایاں بہتری ہو گی۔

مارک ٹکانو نے کہا کہ جدید دنیا کے بزنس ماڈل میں بہتر پیداوار اور کارکردگی کے ساتھ ساتھ منصفانہ معاوضے اور کارکنان کے بہتر معیارِ زندگی کو زیادہ اہمیت حاصل ہے۔ ہفتے میں چار دن کام اور تین دن چھٹیاں اس مقصد کے حصول میں مؤثر حکمتِ عملی ثابت ہوں گی۔

یہ بھی پڑھیں: ترکی کے جنگلات میں لگی آگ ممکنہ سازش قرار

البتہ یومیہ اجرت اور کام کی بنیاد پر معاوضہ لینے والوں پر اس قانون کا اطلاق نہیں ہوگا، جن میں گھریلو کام کاج کرنے والے افراد اور ٹیکسی ڈرائیورز وغیرہ شامل ہیں۔

امریکی فیڈریشن کے صدر رچرڈ ٹرمکا نے بھی مجوزہ قانون کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ نہ صرف تنخواہ کم کیے بغیر کام کے گھنٹوں میں کمی سے منصفانہ ماحول میسر آئے گا بلکہ بے روزگاری کا مسئلہ حل ہونے میں بھی مدد ملے گی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز