دنیا کی تیزترین خاتون انسٹاگرام سے اپنی ویڈیوز ہٹانے پر مجبور

انسٹا گرام نے دنیا کی تیز ترین خاتون کا اکاؤنٹ بلاک کردیا

سوشل میڈیا کی ویب سائٹ انسٹاگرام نے دنیا کی تیز ترین خاتون کا اکاؤنٹ بلاک کرنے کے کئی گھنٹوں بعد بحال کردیا۔

اولمپک گولڈ میڈلسٹ اور جمیکا  کی اسپرنٹر ایلین تھامسن ہیرا نے ٹوکیو اولمپکس کے 200 میٹر ڈبل ڈبل کا مقابلہ جیتنے کے بعد اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ریس کی ویڈیوز شیئر کی تھیں۔

اکاؤنٹ پر ویڈیوز اور تصاویر شیئر کرنے پر انسٹاگرام نے دنیا کی تیز ترین خاتون کھلاڑی تھامسن ہیرا کا اکاؤنٹ بلاک کر دیا تھا۔ ویڈیوز ہٹائے جانے پر انسٹاگرام نے کئی گھنٹوں بعد ان کا اکاونٹ بحال کر دیا۔

تھامسن ہیرا نے ٹوئٹر پر کہا کہ ان کی اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ تک رسائی روک دی گئی تھی کیونکہ انہوں نے ایسی ویڈیوز شیئر کی تھیں جو مبینہ طور پر کاپی رائٹ کے خلاف تھیں۔

فیس بک کے ترجمان نے خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ تھامسن کی جانب سے جب مواد ہٹایا گیا تو اس کے بعد اکاونٹ بحال کردیا گیا۔

تھامسن ہیرا نے منگل  کے روز ٹوکیو اولمپکس میں 200 میٹر ڈبل ڈبل کا مقابلہ 21 منٹ 53 سیکنڈ میں طے کر کے نیا عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا۔  تھامسن ہیرا 4×100 میٹر کے فائنل میں جمعہ کو شرکت کریں گی۔

مزید پڑھیں: ٹوکیو اولمپکس، بھارتی ہاکی ٹیم کی 41 سال بعد کامیابی

خیال رہے کہ سوشل میڈیا پر اولمپک گیمز سے متعلق آن لائن مواد شیئر کرنے پر کاپی رائٹ کے تحت سخت پابندی عائد ہے۔

بین الاقوامی اولمپک کمیٹی (آئی او سی) کے قوائد کے تحت کھلاڑی اولمپک گیمز کے ایونٹ یا میڈل کی تقریب کا آڈیو یا ویڈیو مواد شیئر نہیں کرسکتے کیونکہ مخصوص براڈکاسٹرز کو گیمز کی براہ راست نشریات کے حقوق حاصل ہوتے ہیں۔

یہ مخصوص براڈکاسٹرز ہی اولمپک گیمز سے متعلق مواد کو اپنے اکاؤنٹ سے سوشل میڈیا پر شیئر کرتے ہیں۔ آئی او سی کا کہنا ہے کھلاڑی ان براڈکاسٹرز کی جانب سے شائع کردہ مواد کو دوبارہ شیئر کرسکتے ہیں۔

ٹوکیو اولمپکس میں آئی او سی کو براڈ کاسٹنگ کے حقوق کے تحت 4 بلین ڈالر (2.8 بلین پاؤنڈز) کی آمدن متوقع ہے۔ براڈکاسٹرز کی جانب سے حاصل ہونے والی رقم کا زیادہ حصہ اولمپک کھیلوں اور کھلاڑیوں پر خرچ  کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں