نیشنل ایکشن پلان پر عمل، چین کے تحفظات دور کیے جائیں: بلاول بھٹو

بھارت کی پاکستانی سمندری حدود میں دخل اندازی کی کوشش تشویشناک ہے، بلاول

ٹھٹہ: چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ دہشت گردی اورسی پیک پر چین کے تحفظات دور کیے جائیں۔

بلاول کیخلاف کوئی بات نہیں سن سکتا، شیخ رشید

ہم نیوز کے مطابق انہوں نے یہ بات رکن سندھ اسمبلی محمد علی ملکانی کی رہائش گاہ پر ذرائع ابلاغ سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔

چیئرمین پی پی بلاول بھٹو نے محمد علی ملکانی سے ان کی والدہ کے انتقال پر اظہار تعزیت کیا اور مرحومہ کی روح کے درجات کی بلندی کے لیے فاتحہ خوانی کی۔

انہوں نے واضح طور پر کہا کہ کسی کو بھی اپنی سرزمین دہشت گردی کے لیے استعمال کرنے نہیں دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ چاہتے ہیں کہ جو پاکستان آنا چاہتے ہیں وہ قانونی طریقہ کار سے آئیں۔

بلاول بھٹو نے افغانستان کے دارالحکومت کابل میں گزشتہ روز ہونے والے بم دھماکوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بارڈر پر باڑ لگانے کے اقدام کو ہم سراہتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سرحد پر قانونی دستاویزات کے ساتھ نقل و حرکت کی اجازت ہے۔

عمران خان کی باتیں بڑی بڑی، کارکردگی صفر، بلاول بھٹو

ہم نیوز کے مطابق چیئرمین پی پی نے عمران خان اور ان کی حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عوام نے موجودہ نا اہل حکومت کو مسترد کردیا ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ نا اہل حکومت سے چھٹکارہ ملے۔ ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ تین سالوں کے دوران لوگوں سے روزگار چھین لیا گیا۔ اس حوالے سے انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ اسٹیل ملز کو بند کر کے 10 ہزار خاندانوں سے روزگار چھینا گیا ہے۔

بلاول بھٹو نے دعویٰ کیا کہ پاکستان کے عوام اب پیپلزپارٹی کی طرف دیکھ رہی ہے کیونکہ یہ واحد جماعت ہے جو غریب کی بات کرتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت کی معاشی پالیسیوں سے صرف امرا کو ریلیف ملا ہے جب کہ عوام کو تکلیف پہنچی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 50 لاکھ گھر دینے کا وعدہ کیا مگر گھر گرادیے اور نوکریاں دینے کی بات کی روزگار چھین لیے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی کارکردگی عوام کو تاریخی غربت اور مہنگائی کی شکل میں نظر آئی ہے۔

چین ہمارا دوست، چینی صدر یہاں، عمران خان وہاں جائیں گے، خالد منصور

چیئرمین پی پی بلاول بھٹو نے کہا کہ صوبہ سندھ میں پانی کی قلت بڑھتی جا رہی ہے جب کہ حکومت ہمارے این ایف سی، حقوق اور وسائل پر ڈاکے مار رہی ہے۔ ان کا الزام تھا کہ حکومت وفاق کو نقصان پہنچا رہی ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز