تحریک طالبان پاکستان ہتھیار ڈالے، عام معافی دے سکتے ہیں، شاہ محمود قریشی

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ٹی ٹی پی ہتھیار ڈالے تو عام معافی دی جا سکتی ہے۔ برطانیہ نئی حقیقت کو قبول کرے اور معاشی تباہی سے بچنے کے لیے طالبان کی مدد کرے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ برطانیہ اور مغربی اتحادی ممالک کوئی سیاسی شرائط کے بغیر امداد کی فراہمی میں مدد کریں، نئی حقیقت کو قبول کریں اور ہمیں اپنے مقاصد کے حصول کے لیے کام کرنے دیا جائے۔

انہوں نے مستقبل کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہا کہ طالبان حکام کو تنہا کرنے سے معاشی تباہی، انارکی اور افراتفری پیدا ہوگی، اگر طالبان مثبت باتیں کہہ رہے ہیں تو انہیں اسی سمت میں جھکائیں، کونے میں نہ دھکیلیں۔

یہ بھی پڑھیں: افغانستان میں امن خطے کے مفاد میں ہے،شاہ محمود قریشی

شاہ محمود قریشی نے خبردار کیا کہ پاکستان مزید افغان مہاجرین کو لینے کو تیار نہیں کیونکہ وہ پہلے ہی کئی دہائیوں سے جاری تنازعات سے کئی لاکھ پناہ گزینوں کی میزبانی کر رہا ہے۔

برطانوی جریدے کو انٹرویو دیتے ہوئے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ افغانستان اس وقت مکمل طور پر بین الاقوامی عطیات پر انحصار کر رہا ہے ، جو طالبان کے کنٹرول کے بعد سے اچانک رک گیا ہے۔ اس وقت افغانستان کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ، بشمول جنگ زدہ ملک میں خوراک اور طبی سامان بھیجنا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز