متحدہ عرب امارات کا پاکستانی ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کے معیار پر اظہار تشویش

متحدہ عرب امارات کا پاکستانی ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کے معیار پر اظہار تشویش

اسلام آباد: نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے پاکستانی ایئر پورٹس پر ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کے معیار کے حوالے سے متحدہ عرب امارات کی جانب سے اظہار تشویش پر اہم قدم اٹھاتے ہوئے وفاقی وزارت صحت اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کو خط لکھ دیا ہے۔

متحدہ عرب امارات: مسافروں کو وزٹ ویزہ آن آرائیول فراہم کرنے کا اعلان

ہم نیوز کے مطابق یو اے ای کی جانب سے پاکستانی ایئر پورٹس پر ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کے معیار پر تشویش کے اظہار کے بعد این سی او سی نے وفاقی وزارت صحت اور سی اے اے کو خط لکھ کر ناقص ٹیسٹ کرنے والی لیبارٹریز کے خلاف نوٹس لینے کا حکم دے دیا ہے۔

اس ضمن میں لکھے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ یو اے ای کی سی اے اے نے پاکستانی ایئر پورٹس پر ٹیسٹ کو غیر معیاری قرار دیا ہے۔

متحدہ عرب امارات: غیر ملکیوں کے لیے نیا گرین اور فری لانسر ویزوں کا اجرا

اعداد و شمار کے مطابق اگست 2021 میں پاکستان سے 75 ہزار مسافر یو اے ای گئے تھے۔ ان سب کے پاکستانی ایئر پورٹس پر ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کیا گیا تھا جو منفی تھا لیکن متحدہ عرب امارات پہنچنے پر 684 مسافروں کا کورونا ٹیسٹ مثبت پایا گیا۔

این سی او سی نے واضح کیا ہے کہ یو اے ای کی جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ریپڈ پی سی آر ٹیسٹوں پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے اور ان مسائل سے یو اے ای کے لیے پروازوں کی بحالی کی کوششوں پر سنگین اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔

متحدہ عرب امارات: 38 افراد 15 ادارے بلیک لسٹ

این سی او سی نے اپنے خط میں کہا ہے کہ غیر معیاری ٹیسٹ رپورٹس سے بیرون ملک پاکستان کی ساکھ متاثر ہو رہی ہے اس لیے ریگولیٹری اتھارٹی ایئر پورٹس پر لیبارٹریز کی مانیٹرنگ کو یقینی بنائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز