نیوزی لینڈ کھیلنے پر راضی، اب پاکستان نہ مانا

نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے پاکستان کرکٹ بورڈ سے رابطہ کیا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق کیوی بورڈ نے کہا کہ نیوزی لینڈ دوبارہ پاکستان میں کھیلنا چاہتا ہے۔ ری شیڈول سیریزکیلئے مناسب ونڈو تلاش کر رہے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے نیوزی لینڈ کی نیوٹرل مقام پرکھیلنےکی پیشکش مسترد کردی ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان اور نیوزی لینڈ کی ٹیمیوں کے مابین 18 سال بعد پاکستان میں میچ ہونے جا  رہا تھا۔ آخری لمحے پر دورہ نیوزی لینڈ نے منسوخ کر دیا۔

پی سی بی کا کہنا ہے کہ مہمان ٹیم کی سیکیورٹی کے لیے فول پروف انتظامات کررکھے تھے، نیوزی کرکٹ بورڈ کو سیکیورٹی انتظامات کی یقین دہانی کرائی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: دورہ پاکستان کیوں منسوخ ہوا؟ کیوی کپتان بھی لاعلم

نیوزی لینڈ کے یکطرفہ فیصلے پر دنیا بھر کے کرکٹرز اور شائقین نے مایوسی کا اظہار کیا تھا اور پاکستان کو محفوظ ملک قرار دیا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان نے گزشتہ روز کہا تھا کہ نیوزی لینڈ کا یکطرفہ فیصلہ خطرناک مثال قائم کرے گا۔ فیصلے سے دونوں بورڈزکے تعلقات متاثرہوں گے۔

نیوزی لینڈ ٹیم کی واپسی پر سی ای اوپی سی بی وسیم خان نے کہا کہ چیئرمین پی سی بی معاملے کو آئی سی سی کے سامنے اٹھائیں گے۔

وسیم خان نے کہا کہ ہم نے نیوزی لینڈ میں 14روزقرنطینہ کیا اور مسجد حملےکے باوجود گئے تھے۔

انہوں نے کہ ’کچھ حقائق منظرعام پرلانا چاہتا ہوں۔ جمعہ کوای ایس آئی سیکیورٹی کےسربراہ رگ ڈکیسن نےکال کی۔ رگ ڈکیسن نے بتایاکہ نیوزی لینڈ ٹیم پرحملے کا خدشہ ہے۔

وسیم خان نے کہا کہ ہمیں یا ہماری سیکیورٹی ایجنسیوں کوتھریٹ کے بارے میں نہیں بتایا گیا۔ ہم نے سیکیورٹی ایجنسیوں سےرابطہ کیا تو واضح ہوا کہ کوئی تھریٹ نہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ہم نے 24گھنٹے میں سری لنکا اوربنگلادیش سے رابطہ کیا۔ سری لنکا اوربنگلادیش نے رضامندی ظاہر کی ہے۔ وسیم خان نے بتایا گیا کہ انگلینڈ نے پاکستان آمد کا فیصلہ آج کرنا ہے، امید ہے وہ پاکستان آئیں گے۔

 

 

یہ فوری خبر ہے۔ مزید تفصیلات اور معاملے کے درست حقائق جاننے کے لئے اس صفحہ کو ریفریش کریں۔
متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز