پولیس نے مریم نواز کو میڈیا ٹاک سے روک دیا

ایون فیلڈ ریفرنس کیس پر نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز اسلام آباد ہائیکورٹ پہنچیں جس کے بعد پولیس نے مریم نواز کو میڈیا سے زیادہ بات کرنے سے روک دیا۔

عدالت کے باہر مریم کا کہنا تھا کہ سوال آپ لوگ کرتے ہیں نیب مجھے چارج شیٹ کرتا ہے، دیکھنا چاہتی ہوں نیب میں میرا ہمدرد کون ہے۔

غیر رسمی گفتگو میں  نائب صدر مسلم لیگ ن نے کہا کہ نیب عدالت سے درخواست کرتا ہے کہ میری ضمانت منسوخ کریں،ضمانت منسوخی درخواست کامعاملہ عدالت طے کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں: مریم نواز کی ضمانت منسوخی کیلئےدرخواست دائر

گزشتہ روز اسلام آباد ہائی کورٹ میں 39 صفحات پر مشتمل درخواست دائر کی گئی تھی۔ درخواست میں استدعا کی گئی  کہ مریم نواز بریت کی اہل نہیں سپریم کورٹ نے انہیں خاتون ہونے پر ریلیف دیا ہے۔ مریم نواز نے ضمانت کی رعایت کا غلط استعمال کیا۔

نیب نے اپنی درخواست میں مؤقف اپنایا کہ احتساب عدالت نے مریم نواز کو سات سال قید اور دو ملین پاؤنڈ جرمانے کی سزا سنائی۔ مریم نواز کو کوئی بھی عوامی عہدہ رکھنے کے لیے نااہل قرار دیا گیا۔

چھ جولائی 2018 کو سنائی گئی سزا کے خلاف اپیل تاحال زیر التوا ہے۔ نیب کا کہنا ہے کہ اپیل پر گزشتہ آٹھ سماعتوں میں پانچ مرتبہ اپیل کنندگان کی طرف سے التوا مانگا گیا۔

درخواست میں کہا گیا  کہ مریم نوازعدالت میں ہر پیشی کو سیاسی تھیٹر بنا دیتی ہیں۔ کارکنوں اور حامیوں سے کمرہ عدالت بھر دیتی ہیں۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ 19 ستمبر 2018 کو سزا معطل کر کے ضمانت دینے کا فیصلہ کالعدم کیا جائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز