کولمبیا: مطلوب ترین منشیات اسمگلر گرفتار

کولمبیا کے انتہائی مطلوب منشیات فروش اور ملک کے سب سے بڑے جرائم پیشہ گروہ کے سرغنہ کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

ڈائیرو انتونیو اسوگا، جو اوٹنیئل کے نام سے مشہور ہے، کو ہفتے کے روز فوج ، فضائیہ اور پولیس کے مشترکہ آپریشن کے بعد پکڑا گیا۔

حکومت نے اس کے ٹھکانے کے بارے میں معلومات دینے پر8 لاکھ ڈالر کا انعام مقرر کر رکھا تھا، جبکہ امریکہ نے اس کے سر پر 5 ملین ڈالر کا انعام رکھا تھا۔

ملک کے صدر نے ایک ٹیلی ویژن ویڈیو پیغام میں اوٹنیئل کی گرفتاری کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ یہ اس صدی میں ہمارے ملک میں منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف سب سے بڑی کارروائی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ کارروائی اتنی ہی بڑی ہے جتنی 1990 کی دہائی میں پابلو ایسکوبار کے خلاف کی گئی تھی۔

اوٹنیئل کو شمال مغربی کولمبیا کے صوبے اینٹیوکیا میں ان کے دیہی ٹھکانے سے پکڑا گیا۔ جو پاناما کی سرحد کے قریب ہے۔

آپریشن کی تفصیلات ابھی سامنے آرہی ہیں ، صدر نے کہا کہ ایک پولیس افسر مارا گیا ہے۔

کولمبیا کی مسلح افواج نے بعد میں ایک تصویر جاری کی جس میں دکھایا گیا ہے کہ اس کے سپاہی ہتھکڑی والے اوٹنیئل کی حفاظت کر رہے ہیں۔

اس 50 سالہ شخص کو پکڑنے کے لیے ہزاروں افسران پر مشتمل کئی بڑے آپریشن ہوئے ہیں ، لیکن اب تک کوئی بھی کامیاب نہیں ہوسکا تھا۔

کولمبیا کی سکیورٹی فورسز نے اس گروہ کو ملک کی طاقتور ترین مجرمانہ تنظیم قرار دیا، جبکہ امریکہ نے اسے “بھاری مسلح [اور] انتہائی پرتشدد” قرار دیا۔

یہ گینگ ، جو کئی صوبوں میں کام کرتا ہے اور وسیع پیمانے پر بین الاقوامی رابطے رکھتا ہے ، منشیات اور لوگوں کی اسمگلنگ ، سونے کی غیر قانونی کان کنی اور بھتہ خوری میں مصروف ملوث ہے۔

خیال کیا جاتا ہے کہ اس میں تقریبا1800 مسلح ارکان ہیں جو بنیادی طور پرنیم فوجی دستوں سے بھرتی کیے گئے ہیں۔

یہ گروہ کولمبیا سے امریکہ اور روس تک منشیات سمگل کرنے کے لیے استعمال ہونے والے کئی راستوں کو کنٹرول کرتا ہے۔

اوٹنیئل پر امریکہ کو کوکین بھیجنے، پولیس افسران کو قتل کرنے اور بچوں کو بھرتی کرنے کا الزام ہے۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز