پاکستان کو شکست: آسٹریلیا ٹی 20 ورلڈ کپ کے فائنل میں پہنچ گیا

ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کے دوسرے سیمی فائنل میں آسٹریلیا نے پاکستان کو 5 وکٹوں  سے شکست دے کر  فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا۔

پاکستان نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے آسٹریلیا کو جیت کے لیے 177  رنز کا ہدف دیا تھا۔

آسٹریلیا کی  بیٹنگ شروع ہوتے ہی پہلی گیند پر پہلا کھلاڑی آؤٹ ہوگیا۔ آسٹریلیا کے اوپنر آرون فنچ بغیر کوئی رنز بنائے شاہین آفریدی کی گیند پر ایل بی ڈبلیو آؤٹ ہوئے۔

آسٹریلیاکی دوسری وکٹ52رنزپر گری جب مارش 28رنزبنا کر شاداب خان کی گیندپرآصف علی کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہو گئے۔

آسٹریلیا کی تیسری وکٹ  بھی شاداب خان نے حاصل کی،ان کی گیند پر سمتھ  فخر  زمان کو کیچ دے بیٹھے۔ انہوں نے5 رنز بنائے۔

آسٹریلیا کا چوتھا کھلاڑی بھی  شاداب خان کا شکار ہوا جب وارنر وکٹ کیپر محمد رضوان ہاتھوں پویلین لوٹ گیا، اس نے 49 رنز  بنائے۔

شاداب خان نے آسٹریلیا کے پانچویں کھلاڑی میسکول کو بھی جکڑ لیا،وہ اپنی پسندیدہ ریورس شارٹ کھیلتے ہوئے آوٹ ہو گئے، حارث روف  نے ان کا  ایک مشکل  کیچ پکڑا، میکسول  نے 7 رنز بنائے۔

آسٹریلیاکے 96رنز پر پانچ  کھلاڑی آوٹ ہو گئے تھے،  اس موقع پر میچ  پاکستان کے ہاتھ میں تھا،پھر اسٹوئنس اور میتھیو ویڈ  نےناقابل شکست 40اور41رنز کی اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو فتح دلوا دی۔ شاندار اننگز کھیلنے پر میتھیو ویڈ کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

پاکستان کی طرف سے شاداب خان نے26رنزدیکر4کھلاڑیوں کوآوَٹ کیا۔

پاکستان بیٹنگ: 

آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی، اوپنر بلے بازوں محمد رضوان  اور بابر اعظم نے ایک اچھا  آغاز فراہم کیا۔

محمد  رضوان شروع میں مشکل کا شکار دکھائی دیئے، پھرجلد ہی سنبھل گئے، دوسری طرف  کپتان  بابر اعظم اپنا روایتی کھیل کھلیتے رہے اور انہوں نے شاندار بلے بازی کی۔

یہ بھی پڑھیں: ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ، نیوزی لینڈ فائنل میں پہنچ گیا

پاکستان کا اسکور 71  پر پہنچا  تو کپتان بابر اعظم ایک بڑی ہٹ لگانے کی کوشش میں ایڈم  زمپا کی گیند  پر کیچ دے بیٹھے، انہوں نے 34  گیندوں کا سامنا  کیا اور 39 رنز بنائے،ان کی جگہ فخر زمان آئے۔

محمد  رضوان کریز پر جم گئے اور خوب بلے بازی کی، اپنے پسندیدہ شارٹس کھیلے، تین شاندار چھکے لگائے،آسٹریلیا کے خلاف اپنی ففٹی  اور سال 2021 میں  ٹی 20 میں اپنے ایک ہزار رنز  بھی مکمل کیے۔

محمد رضوان  سٹارک کی گیند پر شارٹ کھیلتے ہوئے کیچ آوٹ ہو گئے، انہوں نے 52 گیندوں کا سامنا کیا اور 67 رنزبنائے۔محمدرضوان کا جانا تھا کہ فخر زمان نے آسٹریلوی باولرز کی پٹائی شروع کر  دی اور انہوں نے 31 گیندوں پر  چھکے کے ساتھ  اپنی ففٹی مکمل کی۔ اور 32 گیندوں کا سامنا کر کے 55 رنز بنائے اورناقابل شکست رہے۔

محمد رضوان کی جگہ ورلڈ کپ میں افغانستان کے خلاف جارحانہ بیٹنگ  کرنے والے آصف علی آئے، ہر نظر ان پر تھی مگر وہ  پہلی ہی گیند پر باونڈری پر کیچ آوٹ ہو گئے۔

آصف علی کی جگہ ورلڈ کپ میں  18 گیندوں پر تیز ترین ففٹی کرنے والے شعیب ملک آئے اور ایک سکور بنانے کے بعد سٹارک کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔

فخر زمان کا ساتھ دینے کے لیے کرکٹ کے پروفیسر محمد حفیظ آئے اور انہوں نے ایک  گیند کا سامناکیا  اور ایک سکور بنایا۔

اس سے قبل  پاکستان نے اپنی پلیئنگ الیون میں کوئی تبدیلی  نہیں کی۔ قومی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپربیٹر محمد رضوان اور آل راؤنڈر شعیب ملک بھی ٹیم کا حصہ تھے،

محمد رضوان اور شعیب ملک فُلو کے باعث گزشتہ روز پریکٹس نہیں کرسکے تھے۔ پی سی بی نے دونوں کھلاڑیوں کا کورونا ٹیسٹ کرایا تھا جس کی رپورٹ کلیئرآئی تھین اور ڈاکٹرز نے انہیں  کھیلنے کی اجازت دے دی  تھی۔

واضح رہے کہ پاکستان نے ٹی  20 ورلڈکپ کے دوران اب تک کسی  میچ  کے لیے پلیئنگ الیون میں کوئی  تبدیلی نہیں کی اور پاکستان پورے ایونٹ  میں ناقابل شکست  رہنے والی واحد ٹیم  ہے۔

گزشتہ روز پہلے سیمی  فائنل میں  نیوزی لینڈ نے انگلینڈ  کو  5 وکٹوں سے شکست دے کر فائنل کے لیے کوالیفائی کرلیاتھا،آسٹریلیا بھی آج فائنل  میں پہنچ گئی، 14 نومبر  کو ورلڈ کپ کے لیے دبئی میں ٹکرائیں گے۔

متعلقہ خبریں