انجکشن کا خوف، شہری کورونا سے ہلاک

برطانیہ میں ایک کمپیوٹر گیمز ڈویلپر کا ماہر انجیکشن سے اس قدر خوف زدہ تھا کہ وہ ویکسین نہ لگوا سکا اور کورونا سے ہلاک ہو گیا۔

برطانوی اخبار کے مطابق 51 سالہ سٹیورٹ گلِیرے نامی شہری کو 20 دسمبر کو اسپتال لایا گیا جہاں وہ ایک دن بعد ہی دم توڑ گیا۔

موت سے پہلے اسپتال سے سٹیورٹ نے ایک پوسٹ کی تھی، جس میں انہوں نے بتایا کہ میری حالت اچھی نہیں مجھے95 فیصد آکسیجن لگائی جا رہی ہے۔لیکن تب تک بہت دیر ہو چکی تھی۔

ہلاک ہونے والے شہری کی اہلیہ نے اپیل کی ہے کہ کورونا ویکسین لگوانا لازمی ہے، اگر آپ کو اس کا خوف بھی ہے پھر بھی اپنی جان کی حفاظت کے لیے ویکسین لازمی لگوائیں۔

یہ بھی پڑھیں: اسلام آباد میں کورونا کیسز کی شرح میں اضافہ، مزید 99 کیسز رپورٹ

ڈیویلپمنٹ کمپنی جسٹ ایڈ واٹر کے سی ای او کی حیثیت سے سٹیورٹ گلِیرے گیمنگ انڈسٹری کی ایک نمایاں شخصیت تھے۔ ان کے دو بچے تھے، ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ ان کے پھپھڑے شدید حد تک خراب ہو چکے تھے، جس نے انہیں سانس لینے کے قابل تک نہ چھوڑا تھا۔

متعلقہ خبریں