ہمیں تماشائی بننے کے بجائے باہر نکلنا ہو گا، سراج الحق

لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں مہنگائی اور کرپشن کی صورت میں آگ لگی ہوئی ہے، ہمیں تماشائی بننے کے بجائے باہر نکلنا ہو گا۔

امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے لاہور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمام حکومتوں نے پرانا نظام انصاف برقرار رکھا ہے اور سامراجی نظام میں کوئی بھی انصاف نہیں دے سکتا۔ انگریز کے نظام سے بغاوت کر کے ہمارے بزرگوں نے پاکستان بنایا تھا لیکن آج بھی ہمارے ججز نے انصاف کے لیے انہیں انگریزوں کی کتابیں اٹھا رکھی ہیں جب تک قرآن کا نظام نافذ نہیں ہو گا ملک میں انصاف کا نظام قائم نہیں ہو سکتا۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کو اقتدار ملا تو عدالتی نظام بدلیں گے۔ ہمیں ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے میں کردار ادا کرنا ہو گا۔ وزیر اعظم عمران خان عدالت میں پیش ہونے کے بجائے ویڈیو لنک سے خطاب کرتے ہیں اور اب ہمیں خاموش تماشائی کا کردار ختم کرنا ہو گا۔

یہ بھی پڑھیں: تحریک انصاف کسی کے ریموٹ کنٹرول سے نہیں چلتی، پرویز خٹک

سراج الحق نے کہا کہ ججز خود کہتے ہیں کہ عدالتوں میں انصاف نہیں اور ججز ریٹائر ہونے کے بعد سچ کہتے ہیں کیونکہ انصاف بکتا ہے۔ امیروں اورغریبوں کے لیے الگ الگ قانون ہے۔ 74 سال بعد بھی ہمیں حقیقی اسلامی پاکستان دیکھنا نصیب نہیں ہوا۔ ہم اس ملک میں قرآن کا نظام چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں لگی آگ کو بجھانے کی ضرورت ہے کیونکہ رونے سے مسئلے حل نہیں ہوتے اور ہمیں تماشائی بننے کے بجائے باہر نکلنا ہو گا۔

امیر جماعت اسلامی پاکستان نے کہا کہ پاکستان ہم سب کا گھر ہے اور پاکستان میں خوشحالی کا مطلب ہمارے گھر میں خوشحالی ہے۔ ملک میں مہنگائی اور کرپشن کی صورت میں آگ لگی ہوئی ہے۔

متعلقہ خبریں