یہ بھارت ہے: حجاب پر پابندی کیخلاف احتجاج کرنے والی طالبات پر مقدمہ درج

یہ بھارت ہے: حجاب پر پابندی کیخلاف احتجاج کرنے والی طالبات پر مقدمہ درج

نئی دہلی: بھارت میں حجاب پر عائد پابندی کے خلاف احتجاج کرنے والی دس طالبات کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

لیکچرار نے حجاب اتارنے کے بجائے استعفیٰ دے دیا

ہم نیوز نے بھارتی خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے حوالے سے بتایا ہے کہ ریاست کرناٹک کے شہر تمکرو میں لڑکیوں کے کالج کے سامنے احتجاج کرنے والی دس طالبات کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

بھارتی ریاست کرناٹک کے تعلیمی اداروں میں حجاب پہننے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی جس کے بعد ریاست میں احتجاجی مظاہرے کیے جا رہے ہیں۔

واضح رہے کہ احتجاجی مظاہروں کے سبب پیدا ہونے والی کشیدگی کے باعث مختلف اضلاع میں دفعہ 144 نافذ کی گئی ہے جس کے تحت احتجاج کرنے پہ پابندی ہے۔

بھارت: حجاب پابندی کا معاملہ برطانیہ پہنچ گیا

بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق ہفتے کے دن کرناٹک کے شہر تمکرو میں انگریزی کی ایک لیکچرار نےحجاب اتارنے کی ہدایت پر استعفیٰ دے یا تھا۔

کالج میں گزشتہ تین سالوں سے پڑھانے والی لیکچرار نے اس حوالے سے کہا تھا کہ یہ عزت نفس کے خلاف ہے۔

حجاب پر پابندی، کویتی پارلیمنٹ میں بھارت کیخلاف قرارداد پیش

چاندنی نے میڈیا کے مطابق کہا تھا کہ گزشتہ تین سالوں کے دوران مجھے کبھی کوئی مسئلہ نہیں ہوا لیکن گزشتہ روز کالج پرنسپل نے کہا کہ میں پڑھاتے وقت حجاب یا مذہب کی نشاندہی کرنے والی کوئی چیز بھی نہ پہنوں تو اس فیصلے نے میری عزت نفس کو مجروح کیا اور میں نے استعفیٰ دے دیا۔

متعلقہ خبریں