ای سی سی: کامیاب اوور سیز پروگرام اور رمضان ریلیف پیکیج کی منظوری

ای سی سی: کامیاب اوور سیز پروگرام اور رمضان ریلیف پیکیج کی منظوری

اسلا م آباد: اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے اوور سیز پاکستانیوں کے لیے کامیاب اوور سیز پروگرام اور رمضان ریلیف پیکج کی منظوری دے دی ہے۔

مخالف لابی کے دباؤ پر پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھا گیا،شوکت ترین

ہم نیوز کے مطابق یہ منظوری وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر شوکت ترین کی زیر صدارت منعقدہ ای سی سی کے اجلاس میں دی گئی۔

اس ضمن میں جاری کردہ اعلامیے کے تحت وفاقی وزیر خزانہ کی زیر صدارت منعقدہ ای سی سی کے اجلاس میں مختلف وزارتوں کی جانب سے بھیجی جانے والی سمریز پرغورو خوص کیا گیا۔

اعلامیے کے تحت اوورسیز پاکستانیوں کیلئے کامیاب اوورسیز پروگرام کی منظوری دی گئی جس کے تحت کم آمدن تارکین وطن کیلئے سود سے پاک قرضے فراہم کیے جائیں گے۔ کامیاب اوورسیز پروگرام کے تحت 10 ہزار 180 افراد کو 3 لاکھ تک قرض فراہم کیا جائے گا۔

ای سی سی کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کے اعلان کے مطابق بجلی نرخوں میں 5 روپے فی یونٹ ریلیف کی منظوری دے دی گئی۔ واضح رہے کہ یہ ریلیف مارچ سے جون 2022 تک، آئندہ چار ماہ کے لیے دیا جائے گا۔

شوق سے آئی ایم ایف نہیں گئے، کیا پہلی حکومتیں نہیں گئیں؟شوکت ترین

اعلامیے کے مطابق وزیراعظم ریلیف پیکیج کے تحت 136 ارب روپے کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ اجلاس میں
8.28 ارب کے رمضان ریلیف پیکیج کی منظوری بھی دی گئی۔ اس کے تحت یوٹیلیٹی اسٹورز پر 19 اشیائے ضروریہ پرسبسڈی دی جائے گی۔

جاری کردہ اعلامیے کے تحت ای سی سی نے امپورٹ سینڈ ایکسپورٹ پالیسی آرڈر 2020 میں ترامیم کی منظوری دے دی۔ اعلامیے کے تحت توغ گیس فیلڈ سے ایس این جی پی ایل کو 16 ایم ایم بی ٹی یو گیس فراہمی کی بھی منظوری دی گئی۔

ہم نیوز نے بتایا ہے کہ پیٹرولیم ریلیف کے تحت آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کو قیمتوں کا فرق حکومت ادا کرے گی۔

اعلامیے کے تحت او آئی سی کے وزرائے خارجہ اجلاس کے لیے 42.89 کروڑ کے فنڈز کی فراہمی کی منظوری بھی دی گئی جب کہ تخفیف غربت و سماجی بہبود ڈویژن کے لیے 4.75 کروڑ کی گرانٹ کی منظوری دی گئی۔

مہنگائی کم ہونے پر اپوزیشن سیخ پا، اصل دکھ اگلی باری نہ ملنے کا ہے، فواد چوہدری

ہم نیوز کے مطابق ای سی سی کے اجلاس سے متعلق جاری کردہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ نیا پاکستان سرٹیفیکیٹس پر اصل اور سود کی ادائیگی کے لیے 135 ارب کی سپلیمنٹری گرانٹ کی بھی منظوری دی گئی۔

متعلقہ خبریں