اللہ کسی کو اجازت نہیں دیتا کہ وہ کہے میں نیوٹرل ہوں، عمران خان

پشاور: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے کہا ہے کہ اس جدوجہد کو سیاست نہیں جہاد سمجھیں۔ اللہ کسی کو اجازت نہیں دیتا کہ وہ کہے میں نیوٹرل ہوں۔

چیئرمین پی ٹی آئی اور سابق وزیر اعظم عمران خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے لیے فیصلہ کن وقت ہے اور میڈیا نے 25 مئی کو مشکل وقت میں کوریج کی۔ 30 سال سے جرم کرنے والے آج اوپر آ کر بیٹھ گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عدالتیں کمزور کو طاقت ور سے تحفظ کے لیے بنتی ہیں، رانا ثنا اللہ نے ماڈل ٹاون میں 14 افراد کو قتل کرایا اور پھر رانا ثنا اللہ کا بیان آیا ہے میں یہ کروں گا وہ کروں گا۔ اللہ کسی کو اجازت نہیں دیتا کہ وہ کہے میں نیوٹرل ہوں۔

یہ بھی پڑھیں: اسلام آباد میں فسادی مارچ کو کسی صورت داخل نہیں ہونے دیں گے،رانا ثنا اللہ

عمران خان نے کہا کہ اس جدوجہد کو سیاست نہیں جہاد سمجھیں اور خوف دور کر کے ہی ایک انسان بڑا انسان بن سکتا ہے۔ 4 ہزار انگریزوں نے ہندوستان پر حکومت کی اور جنرل ڈائر نے جلیانوالہ باغ میں لوگوں پر گولیاں برسائیں۔ لوگوں پر گولیاں برسانے کا مقصد خوف پھیلانا تھا۔

انہوں نے کہا کہ آپ ان لوگوں کو شکست دے گئے اور پاکستان اوپر چلا گیا لیکن یہ جنگ لڑنی پڑے گی اور طاقتور بڑے نہیں چھوٹے چور پکڑتے ہیں۔ سب سے بزدل ظالم ہوتا ہے۔ جو شیلز دہشت گردوں پر استعمال کیے جاتے ہیں وہی مارچ میں استعمال ہوئے اور نعرے کا مطلب یہ نہیں کہ مٹی کے بت کی پوجا نہ کری بلکہ خوف کا بت بھی توڑنا ہے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ شہباز شریف کے خلاف آپ نے عابد باکسر کی ویڈیو دیکھی ہو گی۔

متعلقہ خبریں