نیوٹرل سے صلح چاہتا ہوں، وزیراعظم بننا نہیں چاہتا، زرداری سے نفرت ہے، شیخ رشید

اسلام آباد: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ نیوٹرل سے صلح چاہتا ہوں، عمران خان کی حد تک پی ٹی آئی کے ساتھ ہوں، زرداری سے نفرت ہے، سیاست میں کبھی انتقام نہیں لیا اور کبھی بھی وزیراعظم بننا نہیں چاہتا۔

عمران خان کو اس لیے ہٹایا گیا کہ اسرائیل سے دوستی، بھارت سے تجارت نہیں کر رہا تھا، شیخ رشید

ہم نیوز کے عید پروگرام میں خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا کہ میئر کا الیکشن میں ایک ووٹ سے ہارا تھا، ایم اے جیل سے کیا تھا، 50،60 سال پہلے خونی الیکشن نہیں ہوتے تھے، سیاست میں کسی سے انتقام نہیں لیا۔

شیخ رشید نے دعویٰ کیا کہ نواز شریف کی تحریک نجات بھی میں نے پلان کی تھی، میں عمران خان کے ساتھ کھڑا ہوں، میں عمران خان کی حد تک تحریک انصاف کے ساتھ ہوں، عمران خان کو ہی پی ٹی آئی سمجھتا ہوں۔

ایک سوال کے جواب میں سینئر سیاستدان نے کہا کہ میں ہمیشہ ایک ہی آدمی کے ساتھ سیاست کرتا ہوں جم غفیر کے ساتھ نہیں، میں نے کسی کے ساتھ دھوکہ نہیں کیا، تھانے کی سیاست نہیں کی، لوگ خاندانوں کی سیاست کرتے ہیں۔

عمران خان پاکستان کا سب سے بڑا فتنہ اور بہروپیہ ہے، مریم نواز

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا کہ میری دوسری کتا ب پر بھی نواز شریف کو اختلاف تھا، عمران خان کے ساتھ ابھی تک کسی بات پر کوئی اختلاف نہیں، دشمنی اور دوستی دونوں نمبر ون سے کرتا ہوں، نمبر ٹو کو لفٹ نہیں کراتا۔

سابق وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ سیاست میں غلطیاں ہوتی رہتی ہیں، عدم اعتماد کے بعد عمران خان عوام میں بہت مقبول ہوگئے، نالہ لئی کا منصوبہ مکمل ہونے کے بعد سیاست کو خیر باد کہہ دوں گا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف جو دولت ملک سے لے کر گئے وہ واپس لے کر آئیں، زرداری کو کچھ نہیں کہنا چاہتا، مجھے ان سے نفرت ہے۔

عمران خان بے ساکھیوں کے سہارے آئے تھے،اب کوئی مستقبل نہیں، وزیر اعلیٰ سندھ

ہم نیوز کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ گیارہ پارٹیاں اکھٹی ہوچکی ہیں، میں کبھی بھی وزیراعظم بننا نہیں چاہتا۔

متعلقہ خبریں