کراچی والوں کےلیے بری خبر، بجلی 11روپے 37 پیسےفی یونٹ مہنگی

حکومت نے کے الیکٹرک کے صارفین کیلئے بجلی کی اگر کھوج لگائی جائے تو کے الیکٹرک بمبئی سے کنٹرول ہورہا ہوگا، چیف جسٹسبڑھا دی

کراچی والوں کےلیے بری خبرآ گئی۔ بجلی 11روپے 37 پیسےفی یونٹ مہنگی کرنے  کی منظوری دے دی گئی

کے الیکٹرک کے جون کے ماہانہ فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ کے حوالے سے نیپرا ہیڈ کوارٹر میں عوامی سماعت مکمل  کر لی۔ کے الیکٹرک نےفیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 11 روپے 39 پیسے فی یونٹ اضافے کی درخواست جمع کروائی تھی۔

یہ بھی پڑھیں:بجلی 9 روپے 89 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی منظوری

نیپرا حکام کا کہنا ہے کہ نیپرا کی ڈیٹا کی جانچ پڑتال کے مطابق ایف سی اے کی مد میں 11روپے 37 پیسے فی یونٹ  اضافہ بنتا ہے۔جون کا ایف سی اے مئی کی نسبت 1 روپے 85 پیسے صارفین سے زیادہ چارج کیا جائے گا۔

نیپرا کے مطابق اس سے قبل مئی کا ایف سی اے صارفین سے 9 روپے 52 پیسے چارج کیا گیا تھا۔ جو کہ صرف 1 مہینے کے لئے تھا۔ حالیہ اضافے  کا اطلاق بھی صرف 1 ماہ کے لئے ہو گا۔

سی پی پی اے کی بجلی مہنگی کرنے کی درخواست پر نیپرا میں سماعت ہوئی اور نیپرا نے بجلی 9 روپے 89 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی منظوری دے دی۔

نیپرا کے مطابق ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی جون کےلیے مہنگی  کی گئی ہے۔اضافے سےصارفین پر ایک ارب 33 کروڑ کا بوجھ  پڑے گا۔

چئیرمین نیپرا نے سماعت کے دوران کہا۔اس وقت گھریلو صارف بجلی کے بل میں 29 فیصد اور صنعتی صارف 42 فیصد ٹیکس دیتا ہے۔نیپرا ٹیکس وصول کرنے والی اتھارٹی نہیں۔

ان  کا کہنا ہے کہ اس معاملے پر سابق وزیر خزانہ شوکت ترین سے ملاقات کرکے یہ اشو اٹھایا تھا۔سابق وزیر خزانہ کو کہا تھا کہ اس ٹیکس والے معاملےسے ہمیں نکال دیں۔

انہوں نے کہاہے کہ سابق وزیر خزانہ کہتے تھے کہ ٹیکس لینا حکومت کا کام ہے ، نیپرا ٹیرف کا تعین درست کرے۔موجود وزیر خزانہ سے ملاقات ان کی مصروفیت کی وجہ سے نہیں ہوئی۔

واضح رہے کہ سی سی پی اے نے 9 روپے 90 پئسے جون کے مہینے میں بجلی مہنگی کرنے کی درخواست دی ہے۔

متعلقہ خبریں