پنجاب میں بارشوں اور سیلاب سے 85 افراد جاں بحق،4لاکھ ایکڑ سے زائد رقبہ زیر آب

پی ڈی ایم اے پنجاب نے بارشوں اور سیلاب سے اموات، نقصانات اور انتظامات کے اعدادوشمار جاری کر دیے۔
پی ڈی ایم اے نے 15جون سے 30 جولائی تک کے اعدادوشمار جاری کرتے ہوئے بتایا ہے کہ  ڈیڑھ ماہ میں مختلف حادثات میں 85 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔سیلاب میں 28 افراد جبکہ مون سون بارشوں کے دوران 79 افراد زخمی ہوئے۔
ترجمان پی ڈی ایم اے کے مطابق ڈیڑھ ماہ میں  بارشوں اور سیلاب سے10ہزار 797 گھروں کو نقصان پہنچا۔حالیہ مون سون اور سیلاب میں 4لاکھ ایک ہزار970 ایکڑ رقبہ زیر آب آیا۔
ریکارڈ کے مطابق امدادی ٹیموں نے 2ہزار462 افراد کو سیلابی علاقوں سے بحفاظت نکالا۔فلڈ ریلیف کیمپس میں 7ہزار819 افراد کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کی گئی ہیں۔
رپورٹ کے مطابق حالیہ مون سون اور سیلاب میں 3ہزار 36 جانور بھی ہلاک ہوئے۔ امدادی کاروائیوں کے دوران 501 جانوروں کو سیلابی علاقوں سے ریسکیو کیا گیا۔
میانوالی اور ڈی جی خان ڈویژن میں 29 ریلیف کیمپس قائم  کیے گئے ہیں۔ 176 گھرانوں کے 1ہزار 516 افراد فلڈ ریلیف کیمپس میں رہائش پذیر ہیں۔ریلیف کیمپس میں تمام افراد کو تین وقت کا کھانا،صاف پانی سمیت علاج معالجے کی سہولیات بدستور دی جارہی ہیں۔
 اب تک 2ہزار617 گھرانوں میں ایک ماہ کے لیے خشک راشن کے تھیلے تقسیم کیے جا چکے ہیں ۔ 2ہزار 666 گھرانوں میں ٹینٹس تقسیم کیے گئے ہیں۔
متاثرین کے جانوروں کے لیے  بھی6 ریلیف کیمپس قائم کیے گئے ہیں۔ریسکیو ریلیف آپریشن میں 61 کشتیاں اور 444 ریسکیورز نے حصہ لیا۔
متعلقہ خبریں