پی ٹی آئی کی قیادت کو شہبازگل کے بیان سے الگ ہونا چاہیے، پرویز الہیٰ

وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الہٰی کا کہنا ہے، شہباز گل کے بیان سے فائدہ نہیں نقصان ہوا۔ پی ٹی آئی کی قیادت کو شہبازگل کے بیان سے الگ ہونا چاہیے۔

پرویز الہیٰ کا کہنا ہے کہ میں نے شہبازگل کے بیان کے خلاف بیان دیا۔ شہبازگل کو ڈانٹا کہ یہ بری بات ہے۔ ادارے ہمارے ہیں ان کے خلاف بیان مناسب نہیں ۔عمران خان کا بیان ہے کہ جو فوج کے خلاف ہو وہ پاکستانی نہیں۔

انہوں نے کہاہے کہ وزیرداخلہ راناثنااللہ کا کوئی ذمہ دار بیان دکھادیں تو میں مان لوں۔ سیاسی مخالفت چلتی رہتی رہے گی ،ملک اور صوبے کے مفاد پر کوئی تناو نظر نہیں آئے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ عمران خان کو ہم نے سیکیورٹی دینی ہے، کیوں نہیں دیں گے۔وزیرداخلہ پنجاب کے ساتھ جو سیکیورٹی تھی وہ ساتھ گئی ،ہم نے قانونی کام کیا۔

انہوں  نے کہاہے کہ میں نے کیا اب تک بیوروکریسی کے خلاف کوئی انتقامی کارروائی کی ہے؟آئی جی اور چیف سیکریٹری شہباز شریف نے لگائےتھےمیں نے  ان کو اپنایا اور انہیں دل سے لگایا۔

ان کا کہنا ہے کہ انتقام لینے کے خلاف ہوں اس پر اپنا وقت ضائع نہیں کرنا چاہتا۔لوگوں نے میری کارکردگی کا پوچھنا ہے ،انتقام پر وقت کا ضیاع ٹھیک نہیں سمجھتا۔

متعلقہ خبریں