ایک عدالت میں ضمانت ، دوسری میں مزید جسمانی ریمانڈ کی درخواست،دلائل طلب، نوٹس جاری

شہباز گل مکمل طور پر فٹ اور ہوش میں ہیں، نئی میڈیکل رپورٹ جاری

 اسلام آباد کی مقامی عدالت نے  شہباز گل کی درخواست ضمانت پر دلائل طلب کر لیے،دوسری طرف اسلام آباد ہائیکورٹ  نے شہباز گل کے مزید جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

اسلام آباد کی  ڈسٹرکٹ کورٹ میں  بغاوت پر اکسانے کے مقدمے میں شہباز گل کی ضمانت کی درخواست پر سماعت ہوئی،ایڈیشنل سیشن جج زیبا چوہدری نے شہباز گل کی درخواست ضمانت پر فریقین کو دلائل دینے کی ہدایت کی ہے۔

دوسری جانب اسلام آباد ہائی کورٹ میں بغاوت  کے مقدمے میں شہباز گل کے مزید جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد جہانگیر جدون اور تفتیشی افسر اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیش ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں:شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کے حصول سے متعلق دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد جہانگیر جدون نے دلائل میں کہا  ہے کہ شہباز گل نے ٹی وی چینل پر بیان دیا، جس پرحکومت نے سنجیدہ نوٹس لیا اور مقدمہ درج کیا۔ شہباز گل کے بیان میں اداروں کو ٹارگٹ کیا گیا۔

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ حقیقت یہ ہے کہ آپ کی ایک نظرثانی اپیل خارج ہوئی ،دوسرا فزیکل ریمانڈ ختم ہو چکا۔آپ یہ کہہ رہے ہیں کہ ملزم کا مزید فزیکل ریمانڈ ضروری ہے ؟ آپ نے مزید فزیکل ریمانڈ میں کیا کرنا ہے ؟

عدالت  نے  شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کے لیے ایڈووکیٹ جنرل کی درخواست پر شہباز گل کو نوٹس جاری کردیا،مزید سماعت کل ہو گی

متعلقہ خبریں