اداروں کیخلاف سوشل میڈیا مہم سے پی ٹی آئی کو جوڑنا غلط ہے، فواد چودھری

اسلام آباد: سابق وفاقی وزیر اطلاعات اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چودھری نے کہا ہے کہ اداروں کے خلاف سوشل میڈیا مہم سے پی ٹی آئی کو جوڑنا غلط ہے۔

پی ٹی آئی رہنما فواد چودھری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ احمق لوگ پاکستان کی سب سے بڑی سیاسی جماعت کے خلاف مہم چلا رہے ہیں جبکہ آج پاکستان کو جو متحد رکھ سکتی ہے وہ تحریک انصاف ہے۔ پاکستان میں بنیادی انسانی حقوق معطل ہیں اور ہماری آزادی کی تحریک اصل میں بنیادی انسانی حقوق کے لیے ہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی آواز پر تمام شہروں میں عوام اکٹھی ہوتی ہے جو پاکستان میں بہت ہی کم دیکھنے کو ملتا ہے۔ پی ٹی آئی کی جڑیں چاروں صوبوں میں ہیں اور عمران خان کے علاوہ کوئی ایسی آواز نہیں جو پاکستان کو اکٹھا کر سکے۔

یہ بھی پڑھیں: ممنوعہ فنڈنگ کیس، اکبر ایس بابر کا فریق بننے کا فیصلہ

فواد چودھری نے کہا کہ ججز انسانی حقوق کی حفاظت کے لیے ہوتے ہیں اور ہمیں امید ہے سیشن عدالت سے اچھا فیصلہ آئے گا۔ شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کیس پر 3 گھنٹوں کے طویل دلائل دیئے گئے ہیں۔ ریمانڈ کا کوئی مقصد نہیں سوائے اس کے جیسے پہلے تشدد کیا گیا پھر کیا تشدد کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ شہباز گل کو عمران خان کے خلاف وعدہ معاف گواہ بنانے کا ارادہ ہے جبکہ اڈیالہ جیل میں تحریک انصاف کے رہنماؤں کو شہباز گل سے ملاقات سے روکا گیا۔ حسن نواز کے بجائے شہزاد اکبر کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈال دیا گیا جو کہ ایک احمقانہ فیصلہ ہے۔ حسن نواز سے متعلق شہزاد اکبر کے الزامات سنجیدہ ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ وفاقی تحقیقاتی ادارہ (ایف آئی اے) حسن نواز کو الزامات کی بنیاد پر طلب کرے اور شہباز گل پر تشدد کے خلاف بھی انکوائری بورڈ بننا چاہیے۔ پاکستان میں اس وقت بنیادی انسانی حقوق معطل ہیں۔

متعلقہ خبریں