ملک میں مہنگائی کی شرح 42 فیصد سے بڑھ گئی

ملک میں مہنگائی کی شرح 42 فیصد سے بڑھ گئی ہے، ایک ہفتے میں پیٹرول، بجلی، سگریٹ مہنگے، مرغی کا گوشت، مٹن، انڈے، دہی، چاول کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے جب کہ دال مونگ، دال ماش، ٹماٹر، آلو، پیاز، گڑ بھی مہنگے ہوئے ہیں۔

وفاقی ادارہ شماریات نے ہفتہ وار بنیادوں پر مہنگائی کے اعدادوشمار جاری کر دیئے، جس کے مطابق مہنگائی کی شرح میں 3.35 فیصد مزید اضافہ ہوا ہے۔

حالیہ ہفتے کے دوران 25 اشیائے ضروریہ کی قیمتیں بڑھ گئی، ٹماٹر، پیاز، آلو، دالیں، چکن، فی درجن انڈوں کی قیمت میں اضافہ ہو گیا۔

ایک ہفتے کے دوران ٹماٹر کی فی کلو قیمتوں میں 18 روپے سے زائد، پیاز کی فی کلو قیمت میں 2 روپے، آلو کی فی کلو قیمت 65 پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

روپے کی قدر مستحکم ہو رہی، مہنگائی میں کمی آئے گی، مفتاح اسماعیل

ادارہ شماریات کے مطابق زندہ مرغی کی فی کلو قیمتوں میں 19 سے زائد اضافہ ہوا، فی درجن انڈوں کی قیمت میں 3 روپے 34 پیسے، دال ماش کی فی کلو قیمت میں 1 روپیہ، دال مونگ کی فی کلو قیمت میں 3 روپے، بیس کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت میں 36 پیسے کا اضافہ ہوا۔

حالیہ ہفتے کے دوران دہی، مٹن، خشک دودھ کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا، 11 اشیا کی قیمتوں میں کمی اور 15 اشیا کی قیمتوں میں استحکام رہا جب کہ اڑھائی کلو گھی کا ٹن 4 روپے 7 پیسے کم ہوا۔

دال کی فی کلو قیمت میں تقریباً 1 روپے، دال مسور کی فی کلو قیمت میں 1 روپیہ سے زائد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

 

متعلقہ خبریں