ملک میں ڈالر نہیں بلکہ سامراجی پالیسیاں آرہی ہیں، شیخ رشید

راولپنڈی: سابق وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ ملک میں ڈالر نہیں آ رہے بلکہ سامراجی پالیسیاں آ رہی ہیں۔

سابق وزیر داخلہ اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا کہ ڈالر کی قلت، سندھ میں فصلوں کی تباہی اور مہنگائی کا طوفان قوم کا امتحان ہے۔ ملک میں ڈالر نہیں آ رہے بلکہ سامراجی پالیسیاں آرہی ہیں اور ڈالر کے ذخائر اب بھی منفی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ریاست اور عوام کی طاقت آمنے سامنے ہے جبکہ عدالتی اور قانونی جنگ میں عدلیہ پر بڑی ذمہ داری آ گئی ہے۔ قومی برداشت جواب دے گئی ہے۔

شیخ رشید احمد نے کہا کہ شکور شاد کے استعفیٰ کی معطلی سے سارے استعفے ہی معطل ہو گئے ہیں۔ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) اپنے بیٹوں میں بانٹ رہی ہے اور غریبوں کو ڈانٹ رہی ہے۔ یہ ابھی تک صوبوں میں گورنر نہیں لگا سکے۔

یہ بھی پڑھیں: شہباز گل کی درخواست ضمانت 14 ستمبر کو سماعت کے لیے مقرر

انہوں نے کہا کہ یہ غربت مٹاؤ نہیں بلکہ غریب مکاؤ پالیسی لائے ہیں اور یہ انقلابی نہیں بلکہ سیلابی ہیں۔ خارجہ پالیسی میں دوحہ میٹنگ کے بعد بڑا یو ٹرن آ گیا ہے اور  ملک میں امداد نہیں بلکہ حکم نامے آرہے ہیں۔

متعلقہ خبریں