پنجاب کے فنڈز روک دیئے گئے تاکہ صوبہ کھنڈرات میں بدل جائے، وزیر اعلیٰ پنجاب

لاہور: وزیر اعلیٰ پنجاب پرویز الہیٰ نے کہا ہے کہ وفاق واجبات روک کر ترقیاتی کاموں میں حائل ہو رہا ہے اور پنجاب کے فنڈز روک دیئے گئے تاکہ صوبہ کھنڈرات میں بدل جائے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب پرویز الہیٰ کی زیر صدارت ترقیاتی منصوبوں سے متعلق پیش رفت جائزے کا اجلاس ہوا۔ وزیراعلیٰ پرویز الہٰی نے وفاق کی طرف سے پنجاب کو 146 ارب روپے کے واجبات ادا نہ کرنے پر اظہار تشویش کیا۔

وزیر اعلیٰ پنجاب پرویز الہیٰ نے کہا کہ وفاقی حکومت کی طرف سے پنجاب کے قانونی اور آئینی واجبات روک لیے گئے ہیں اور وفاقی حکومت نے سیلاب زدگان کے لیے آنے والی امداد میں سے بھی پنجاب کو کچھ نہیں دیا۔

انہوں نے کہا کہ سیلاب متاثرین کے گھر بنانے کے لیے وفاقی حکومت کی طرف سے شیئر بھی نہیں دیا گیا اور واجبات کی عدم ادائیگی کی وجہ سے سیلاب زدگان کی بحالی کی سرگرمیاں بھی سست روی کا شکار ہوسکتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: اسحاق ڈار کا آنا پاکستان کے نظام انصاف کے منہ پر زناٹے دارتھپڑ ہے، فواد چودھری

پرویز الہیٰ نے کہا کہ 146 ارب روپے کے واجبات روکے جانے کی وجہ سے صحت سمیت دیگر منصوبے متاثر ہو سکتے ہیں۔ مریضوں کو مفت ادویات اور سہولتیں دینا چاہتے ہیں لیکن وفاق واجبات روک کر حائل ہو رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وفاق سے واجبات نہ ملنے کی وجہ سے اسپتالوں کی تکمیل کا عمل رک سکتا ہے۔ جان بوجھ کر پنجاب کے فنڈز روکے گئے ہیں تاکہ صوبہ ترقی نہ ہونے سے کھنڈارات میں بدل جائے۔ پنجاب کی ہزاروں کلو میٹر طویل خستہ حال سڑکیں فوری مرمت کی متقاضی ہیں اور پنجاب جیسے بڑے صوبے کے فنڈز روکنا قومی یکجہتی کے تقاضوں کے منافی ہے۔

متعلقہ خبریں