ریاست خواتین کیخلاف ہراسگی کے واقعات کو روکے، صدر مملکت

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ریاست کا فرض ہے وہ خواتین کے خلاف ہراسگی کے واقعات کو روکے۔

پشاور کے دو اہلکاروں کو “نوکری سے برطرفی” اور 5 لاکھ جرمانے کی سزا برقرار رکھی گئی ہے۔ ادارے کے چیف فنانس آفیسر اور پراجیکٹ ڈائریکٹر کے خلاف جنسی ہراسانی کے الزامات ثابت ہونے پر سزا دی گئی تھی۔

اس موقع پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایسے افراد نہ صرف اپنے ادارے بلکہ ملک کے تاثر کو بھی داغدار کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات خواتین کے کام کرنے میں ہچکچاہٹ محسوس کرنے کی بڑی وجہ ہیں اور ریاست کا فرض ہے کہ وہ خواتین کے خلاف ہراسگی کے واقعات کو روکے۔

یہ بھی پڑھیں: وزیر اعلیٰ پنجاب کا اسموگ میں کمی کیلئے افسران کو فیلڈ میں جانے کا حکم

ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ پاکستان میں جنسی ہراسانی کے صرف چند ہی واقعات رپورٹ ہوتے ہیں تاہم وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت کے فیصلے کے خلاف ملزمان کی اپیل مسترد کی جاتی ہے۔

متعلقہ خبریں