ارشد شریف کی والدہ کی درخواست پر نوٹس جاری

شہید ارشد شریف کی والدہ نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی کہ پمز اور اسلام آباد انتظامیہ پورسٹمارٹم رپورٹ فراہم نہیں کررہی، شک ہے کہ حقائق مسخ کرنےکے لیے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں رد وبدل کیا جا سکتا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ارشد شریف کی فیملی کو پوسٹ مارٹم رپورٹ فراہم نہ کرنے پر پمزاسپتال اور اسلام آباد انتظامیہ کو نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں مرحوم ارشد شریف کی پوسٹمارٹم رپورٹ فراہم نہ کرنے کے خلاف والدہ کی درخواست پر سماعت جسٹس عامر فاروق نے کی، ارشد شریف کی والدہ کی طرف سے بیرسٹر شعیب رزاق عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں: ارشد شریف قتل کیس کے ثبوت 3 مقامات پر رکھے ہیں، مراد سعید کا دعویٰ

درخواست میں کہا گیا کہ پمز اور اسلام آباد انتظامیہ پورسٹمارٹم رپورٹ فراہم نہیں کررہی۔ شک ہے کہ حقائق مسخ کرنےکے لیے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں رد وبدل کیا جا سکتا ہے۔ اس لیے پورے عمل کو شفاف بنانے کیلئے ارشد شریف کی فیملی کو ہر لمحہ آگاہ رکھا جائے۔

ارشد شریف کی والدہ کی جانب سے استدعا کی گئی ہے کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ صرف ارشد شریف فیملی کو فراہم کی جائے اور بغیر فیملی کی اجازت اسے پبلک نہ کیا جائے، عدالت نے کیس کی سماعت آئندہ  پندرہ نومبر تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ خبریں