میٹا میں بھی ملازمین کی چھانٹی

ٹوئٹر کے بعد میٹا نے بھی ملازمین کی  برطرفیوں کا آغاز کر دیا۔

میٹا کی جانب سے ملازمین کی چھانٹی کا سلسلہ شروع کر دیا گیا۔ خبر ایجنسی کے مطابق میٹا کمپنی دنیا بھر سے 11 ہزار سے زائد ملازمین کو فارغ  کررہی ہے۔

میٹا کے سی ای اومارک زکر برگ نے ایک خط میں  کہا ہے کہ چھانٹیوں کا فیصلہ میٹا کی تاریخ کی سب سے مشکل تبدیلی ہے۔ کمپنی کے 13 فیصد ملازمین کو فارغ کیا جا رہاہے۔

یہ بھی پڑھیں:امریکی صدر نے ٹوئٹر کو جھوٹا قرار دے دیا

انہوں نے کہا ہے کہ متاثرہ افراد سے ہمدردی ہے، اپنے اس فیصلے کی مکمل ذمہ داری لیتا ہوں۔کمپنی کو زیادہ بہتر بنانے کے لیے مزید اقدامات بھی کررہے ہیں۔

جن ملازمین کو نکالا جارہا ہے انہیں 16 ہفتوں کی تنخواہ دی جائے گی جبکہ 6 ماہ تک ہیلتھ انشورنس کے اخراجات بھی کمپنی ادا کرے گی۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ایلون مسک نے ٹوئٹر کا کنٹرول سنبھالنے کے بعد کئی ملازمین کو فارغ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں