اگر انتخابات تاخیر سے بھی ہوئے تو پی ٹی آئی پھر کامیاب ہو گی، عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کا فیض آباد پر دھرنا دینے کا فیصلہ

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ اگر انتخابات تاخیر سے بھی ہوئے تو پی ٹی آئی پھر کامیاب ہو گی۔

لانگ مارچ کے شرکا سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہماری حکومت میں معیشت ترقی کررہی تھی ، سازش کے تحت حکمرانوں کو اقتدار پر بٹھایا گیا، ہمیں بتایا گیا شہباز شریف جینئس ہے، اس سے قابل کوئی نہیں ، اسٹیلبشمنٹ سے کہا تھا ان سے ملک نہیں سنبھلے گا۔

انہوں نے کہا کہ پچاس سال میں سب سے زیادہ مہنگائی گزشتہ سات ماہ کے دوران ہوئی ، بتایاجائے ذمہ دار کون ہے؟ ان دو خاندانوں نے دس سال میں پاکستان کا قرض چار گنا بڑھایا ، خود امیر ہوگئے ، عوام مقروض ہوگئے ،  ان کو جب خطرہ ہوتا ہے باہر بھاگ جاتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس صاحب کے پاس تینوں لینڈ مارک کیسز ہیں، ارشد شریف ایسا صحافی تھا جس کے ضمیرکی کوئی قیمت نہیں تھی، اسے دھمکیاں دے کر ملک سے بھگایا گیا، اعظم سواتی کو تنقیدی ٹویٹ پر ننگا کر کے مارا گیا، کِدھرسے انصاف ملے گا چیف جسٹس صاحب اس لیے آپ کے پاس گئے ہیں، سب سے بڑی پارٹی کا سربراہ ہوں، مجھ پرقاتلانہ حملہ ہوا، سازش بارے پہلے ہی بتادیا تھا، تین نام لیے اب تک میری درخواست پر مقدمہ درج نہیں ہوا، سابق وزیراعظم ہوں، چیف جسٹس صاحب یہ لمحہ فکریہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ تین لوگوں کا نام درج کرانا میرا بنیادی حق ہے، ہوسکتا ہے انویسٹی گیشن میں یہ نام غلط ثابت ہو جائیں، اپنی حکومت ہونے کے باوجود ایف آئی آردرج نہیں کرا سکا، یہی توکہتا ہوں ملک میں طاقت وراورکمزورکے لیے الگ الگ قانون ہے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اس ملک میں انصاف نہ ملنا ملک کی تباہی کا سبب ہے، چیف جسٹس صاحب ہم انصاف کے لیے آپ کی طرف دیکھ رہے ہیں، ہمیں انصاف کی کہیں اور امید نہیں، چیف الیکشن کمشنر ن لیگ کے قریب اوراس کو ہینڈلربھی کنٹرول کر رہے ہیں، چیف الیکشن کمشنر اور کراچی کے الیکشن کمشنر کے خلاف ہم عدالت گئے ہیں، ہم تو بار بار کہہ رہے ہیں، چیف الیکشن کمشنر غیر جانبدار نہیں، وہ بار بار ہمارے خلاف فیصلے کر رہا ہے۔

وقت آگیا ہے قوم عمران خان کے گریبان پر ہاتھ ڈالے، جھوٹے بیانیے کی قیمت ادا کرنا پڑیگی، خواجہ آصف

ان کا کہنا تھا کہ چیف الیکشن کمشنر نے توشہ خانہ کیس میں ڈس کوالیفائی کر دیا، لکھ کر دیتا ہوں توشہ خانہ کیس میں کوئی غیرقانونی چیزثابت نہیں ہوگی، آصف زرداری، نوازشریف،یوسف رضا گیلانی کے توشہ خانہ کیس کے فیصلے نہیں سنائے جا رہے، آصف زرداری،نوازشریف،یوسف رضا گیلانی نے توشہ خانہ سے چارمہنگی گاڑیاں لیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جب اداروں میں میرٹ ہو گا تو تبھی ادارے مضبوط ہوتے ہیں، نوازشریف میرٹ پر فیصلہ نہیں کرے گا، پہلے چوروں کومسلط کیا پھر انہوں نے اپنے کیسز ختم کر دیئے، شہبازشریف کیس کے چارگواہان مرگئے کسی نے نہیں پوچھا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف بزدل آدمی ہے، الیکشن میں ہارنے کا خوف ہے، نوازشریف جمخانہ میں بھی اپنے امپائرکھڑے کرکے میچ کھیلتا تھا۔

مزید کہا کہ نوازشریف کو ڈر ہےعمران خان الیکشن جیت جائے گا، کرپٹ آدمی بزدل ہوتا ہے یہ پاکستان کی تقدیرسے کھیل رہا ہے، حقیقی آزادی مارچ کا مقصد ملک میں انصاف قائم کرنا ہے۔

 

متعلقہ خبریں