یقین کریں، چوہے پولیس سے نہیں ڈرتے،500 کلو چرس کھا گئے، عدالت نے ثبوت مانگ لیے

یقین کریں، چوہے پولیس سے نہیں ڈرتے،500 کلو چرس کھا گئے، عدالت نے ثبوت مانگ لیے

نئی دہلی: عدالت یقین کرے، جسامت میں چھوٹے ہونے کی وجہ سے چوہوں کو پولیس کا کوئی ڈر نہیں ہے اور ایس ایچ اوز ہر معاملے کو حل کرنے کی مہارت نہیں رکھتے ہیں، چوہے 500  کلو گرام سے زائد چرس کھا گئے ہیں۔

’برآمد کرنے کے لیے چرس اور افیم کی فیکٹریاں لگیں تو کوئی برائی نہیں‘

مؤقر بھارتی اخبار ’ٹائمز آف انڈیا‘ کے مطابق بھارتی شہر متھورا کی پولیس نے عدالت میں یہ مؤقف اس وقت اپنایا جب اس سے کہا گیا کہ وہ ضبط کی جانے والی 500 کلو گرام سے زائد چرس عدالت میں پیش کرے۔

پولیس کے مطابق ضبط کی جانے والی 500 کلو گرام چرس شیر گڑھ اور ہائی ویز پولیس اسٹیشنز کے گوداموں میں رکھی گئی تھی جس کی مالیت 60 لاکھ روپے تھی۔

عدالت نے متھورا کے ایس ایس پی ابھیشک یادیو کو پولیس کی جانب سے جمع کرائی جانے والی رپورٹ پر حکم دیا کہ چوہوں کے خطرے سے چھٹکارہ حاصل کر کے وہ یہ بھی ثابت کریں کہ چوہے 60 لاکھ روپے سے زائد مالیت  چرس کھا گئے ہیں۔

بارودی سرنگ سے بچانے والے چوہے کو گولڈ میڈل دے دیا گیا

اخبار کے مطابق عدالت نے پولیس گودام میں رکھی گئی چرس کو نیلام کرنے کے لیے پانچ نکاتی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔

متھورا پولیس نے عدالت میں اپنی بات کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ جسامت میں بالکل چھوٹا ہونے کی وجہ سے چوہوں کو پولیس کا کوئی ڈر نہیں ہے اور ایس ایچ اوز ہر معاملے کو حل کرنے میں مہارت بھی نہیں رکھتے ہیں۔

سرکاری وکیل رنویر سنگھ نے اس موقع پر مؤقف اپنایا کہ پولیس کے لیے گوداموں میں رکھے گئے مواد کو محفوظ کرنا مشکل ہوگیا ہے کیونکہ وہاں بڑی تعداد میں چوہے موجود ہیں۔

جس عہد میں لٹ جائے فقیروں کی کمائی: پولیس بھتے کیخلاف گداگر عدالت پہنچ گیا

عدالت نے پولیس کو اپنا دعویٰ ثابت کرنے کا حکم  دیتے ہوئے اگلی سماعت 26 نومبر کو مقرر کردی ہے۔

متعلقہ خبریں