حکومت گوگل کو ادائیگی پر راضی، ایپس بند نہیں ہوں گی

 حکومت گوگل کو ادائیگی پر رضا مند ہو گئی ۔  صارفین کے لیےموبائل اکاؤنٹ کی مدد سے گوگل پلے سٹور تک رسائی  معطل نہیں ہو گی۔

وزارت خزانہ اسحاق ڈار نے وزیر آئی ٹی امین الحق کی تجویز مان لی۔ حکومت  گوگل کو ادائیگی پر راضی ہو گئی۔ وزیر آئی ٹی امین الحق کا کہنا ہے کہ ادائیگیاں شیڈول کے مطابق کی جاسکیں گی، پیڈ گوگل ایپس بند نہیں ہونگی۔

یہ بھی پڑھیں:نئی ٹیکنالوجی، قوت سماعت سے محروم افراد کیلئے خوشخبری

وزیر آئی ٹی امین الحق سے معاون خصوصی خزانہ طارق باجوہ  نے رابطہ کیا ہے۔ امین الحق کا کہنا ہے کہ اسٹیٹ بینک کو ہدایت کردی گئی کہ ایک ماہ تک پالیسی پر عملدرآمد مؤخر کردیں۔ٹیلی کام آپریٹرز کو ادائیگیوں کے طریقہ کار پر عمل کیلئے ایک ماہ کا وقت دیدیا گیا۔

ایک ماہ میں وزارت آئی ٹی، خزانہ اور اسٹیٹ بینک باہمی مشاورت سے لائحہ عمل مرتب کریں گے۔ٹیلی کام آپریٹرز نے وزارت آئی ٹی سے معاملے پر معاونت کی اپیل کی تھی۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار کو ادائیگیاں کرنے اور ٹائم فریم دینے کیلئے مراسلہ لکھا تھا۔

پاکستان کے سٹیٹ بینک کی جانب سے ڈائریکٹ کیریئر بلنگ  یعنی براہ راست  ادائیگیوں کے نظام کو معطل کرنے کا فیصلہ کیاگیا تھاجس کے بعد پاکستانی صارفین اپنے موبائل فون اکاؤنٹ میں موجود رقم کے ذریعے گوگل پلے سٹور سے اپلیکیشنز ڈاون لوڈ نہیں کر پاتے۔

 فیصلے پر عملدر آمد کی صورت میں صارفین کو ڈیبٹ کارڈ اور کریڈٹ کارڈ کے ذریعے گوگل پلے سٹور سے ایپس ڈاون لوڈ کرنا پڑتی۔

 یہ بھی پڑھیں:کیا اب ایلون مسک کا اگلا نشانہ ”ایپل” ہو گا ؟

 ٹیلی کام کمپنیوں کی جانب سے وفاقی حکومت کو لکھے گئے ایک مشترکہ خط میں اس کی نشاندہی کی گئی تھی کہ ادائیگی کے اس نظام کی معطلی سے پاکستان میں عالمی اداروں گوگل، ایمازون اور میٹا وغیرہ کی جانب سے پیش کی جانے والی خدمات متاثر ہوں گی اور اس سے ملک کے ٹیلی کام اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

 جس کے بعد حکومت نے ٹیلی کام کمپنیوں کی درخواست منظور کرتے ہوئے ایک ماہ کے لیے گوگل کو ادائیگی کا فیصلہ کیا ہے۔ ایک ماہ کے اندر  ادائیگیوں کے طریقہ کار پر پالیسی مرتب دی جائے گی۔

متعلقہ خبریں