ہماری چوائس ہے بجٹ دیکر جائیں، عمران خان اسمبلی تحلیل کرنا چاہیں تو تیار ہیں، مونس الٰہی

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ق) کے رہنما اور وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کے صاحبزادے مونس الٰہی نے کہا ہے کہ ہماری چوائس ہے کہ اگلا بجٹ دے کر جائیں، عمران خان اگر اسمبلی تحلیل کرنا چاہیں تو ہم تیار ہیں۔

پنجاب اور خیبرپختونخوا میں تحریک عدم اعتماد لانے کا اعلان

ہم نیوز کے پروگرام ’ ہم مہر بخاری کے ساتھ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی نے کہا کہ عمران خان اورچودھری پرویزالہٰی کی ملاقات آج ہوئی، اسمبلیاں تحلیل کرنے کا حتمی فیصلہ عمران خان ہی کریں گے، عمران خان کی مقبولیت عروج پر ہے سیاسی رائے یہ ہے کہ کل ہی الیکشن ہو جائیں۔

مونس الہٰی نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں پی ٹی آئی کے پاس مضبوط مینڈیٹ ہے، 18 ویں ترمیم ان کے گلے پڑ گئی ہے، وفاق ہمارے سامنے بے بس ہے، 6 مہینے بعد انہوں نے فارغ ہو ہی جانا ہے، ہماری حکومت پہلے ہی بونس پر چل رہی ہے، جب حکومت بنی تو عمران خان نے کہا کہ حکومت 10 دن چلنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گورنرراج نہیں لگ سکتا، سازش بیانیے کے معاملے پر کچھ گڑ بڑ تھی، ہرادارے کو اپنا کام کرنا چاہیے، قائداعظم کے ان اصولوں سے اتفا ق کرتا ہوں، عمران خان پر حملے کی ایف آئی آر سے متعلق کوئی دباؤ نہیں تھا، عمران خان سے ملاقات میں انہیں حقائق سے آگاہ کیا، ہم نے صرف یہ کہا تھا یہ کام ایسے نہیں ہو گا۔

رجیم چینج سے متعلق جو باتیں سنیں ان میں کچھ نا کچھ تو تھا، عمرا ن خان حملے کے ملزم کا ویڈیولیک معاملے پر سوالیہ نشان ہے، ویڈیو لیک کا پوچھا تو ایک افسر نے کہا کہ سسٹم ہیک ہو گیا تھا جب کہ ایک افسر نے کہا سسٹم ہیک نہیں ہوا آپ انکوائری کرائیں۔

ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے مونس الٰہی نے کہا کہ پی ٹی آئی کے بڑے وثوق والے لوگ بیٹھے ہیں، اپنا بندہ دیں اسے ایس ایچ او لگا دیتے ہیں، ہم پر الزام آ رہا تھا کہ ق لیگ نہیں کر رہی، ہم نے انہیں مسئلے کا حل دے دیا، آصف زرداری نے کوئی رابطہ نہیں کیا، 186 ارکان اپوزیشن نے پورے کرنے ہیں۔

سیاسی صورتحال بہت نازک ہے، پی ٹی آئی کے بعض اراکین رابطے میں ہیں، خواجہ آصف

ق لیگ کے رہنما نے کہا کہ جب گورنراعتماد کا ووٹ لینے کا کہیں گے تو ہم اپنے بندے پورے کر لیں گے، جب 30 ،30 کروڑ کی آفرکی گئی اور بندے نہیں ٹوٹے تو اب کیسے ٹوٹیں گے؟ عمران خان کا صوابدیدی اختیارہے وہ اگر کل کہیں گے تو اسمبلی کل تحلیل ہو جائے گی، آصف زرداری نے پہلے بھی پنجاب فتح کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن پھر کچھ نہیں کیا۔

ق لیگ کے سربراہ اور سابق وزیراعظم کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ جب تک چودھری پرویزالہٰی وزیراعلیٰ نہیں بنے تھے تب تک چودھری شجاعت سے معاملات درست تھے، چودھری شجاعت سے یہی بحث ہے کہ وزیراعلیٰ بننے کے بعد کیوں سب کچھ برا ہونے لگا؟ چودھری پرویزالہٰی نے چودھری شجاعت کو بتایا تھا کہ عمران خان کی طرف جا رہے ہیں۔

مونس الٰہی نے کہا کہ چودھری شجاعت مجھے نوازشریف کے قصے سنایا کرتے تھے کہ 30 سال میں یہ یہ ہمارے ساتھ کیا، جب پرویزالہٰی وزیراعلیٰ بننے لگے تو پھرکہا کہ نوازشریف (یعنی میرا) کا وزیراعلیٰ بننا چاہیے، چودھری شجاعت سے معاملات بہتر کر لیں گے۔

اسمبلیاں کب تحلیل کریں گے؟ فیصلہ آئندہ ہفتے ہو گا، فواد چودھری

ہم مہر بخاری کے ساتھ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے مونس الہٰی نے کہا کہ اگر 10 سیٹوں کے ساتھ آپ وزیراعلیٰ بن سکتے ہیں تو پاکستان میں کچھ  بھی ہو سکتا ہے۔

متعلقہ خبریں