گورنر خیبرپختونخوا کا الیکشن کمیشن کو مراسلہ،الیکشن کی تاریخ نہیں دی

خیبرپختونخوا میں عام انتخابات کے معاملے پر گورنر کے پی نے مشاورتی اجلاس سے متعلق مراسلہ الیکشن کمیشن کو ارسال کردیا۔

گورنر خیبرپختونخوا غلا م علی نے مراسلے میں الیکشن کی تاریخ نہیں دی۔گورنر غلام  علی نے  الیکشن کمیشن کو تمام اسٹیک ہولڈر سے مشاورت کی ہدایت کی۔

گورنر خیبرپختونخوا نے الیکشن کمیشن کو ارسال رپورٹ میں کہا ہے کہ اس وقت سکیورٹی صورتحال نازک ہے اور اضافی سکیورٹی اہلکار دستیاب نہیں۔

گورنر خیبرپختونخوا نے کہا کہ مشکل معاشی صورتحال ہے اور مردم شماری ہورہی ہے، حلقہ بندی ہونی ہے، عام انتخابات کی تاریخ کے اعلان سے قبل ان چیلنجز کو حل کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:گورنر کے پی نےخیبر پختونخوامیں الیکشن کے لیے 28 مئی کی تاریخ دے دی

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دہشتگردوں کے خلاف چند ماہ میں آپریشن ختم ہوگا، اس کو بھی مد نظر رکھا جائے، خیبرپختونخوا میں دہشتگردی کی کارروائیوں کی رفتار میں اضافہ ہو رہا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ ضم شدہ قبائلی اضلاع میں سکیورٹی صورتحال بہت نازک ہے اور سرحد پار سے دہشتگرد گروپس ضم اضلاع میں آکر آباد ہوگئے ہیں، ضم اضلاع میں رہائشیوں کو دیگر اضلاع کے مقابلے میں 100 فیصد زیادہ خطرہ ہے، ان خطرات کے باعث سیاستدانوں اور پولنگ اسٹاف کی آزادانہ نقل و حرکت ممکن نہیں۔

رپورٹ میں گورنر کے پی نے مزید کہا کہ الیکشن سے متعلق صورتحال پرآئین اور الیکشن ایکٹ کے تحت حل تلاش کیاگیا، الیکشن کی تاریخ وزارت دفاع اور داخلہ سمیت دیگر شراکت داروں کو اعتماد میں لے کر رکھی جائے۔ماضی میں ایسی صورت حال پیدا ہوئی جس کا آئین اور الیکشن ایکٹ کے تحت حل تلاش کیا گیا۔

متعلقہ خبریں