آزادی پریڈ میں بھارتی گانا گانے پر عاطف اسلم مشکل میں

August 9, 2018

اسلام آباد: معروف گلوکار عاطف اسلم  کو نیو یارک میں پاکستان کی آزادی پریڈ کے حوالے سے ہونے والے ایک کنسرٹ میں  ہندوستانی گانا گانے  کی وجہ سے سوشل میڈیا پر سخت تنقید کا سامنا ہے۔

رواں ہفتے کے اوائل میں ہونے والے اس کنسرٹ میں عاطف اسلم  خصوصی پرفارمر تھے، انہوں نے انڈین  فلم کے لیے اپنا گا یا ہوا ایک گانا ‘تیرا ہونے لگا ہوں’  گایا جو بعد میں ان کے گلے پڑ گیا۔

کنسرٹ کے اختتام سے ہی ان کے ناقدین نے سوشل میڈیا پر طوفان مچا رکھا ہے اور عاطف اسلم کے اس اقدام کو حب الوطنی کے خلاف ثابت کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔

ٹوئٹر خاص طور پر اس حوالے سے میدانِ جنگ بنا رہا، ایک طرف عاطف کے ناقدین ان پر الزام  لگا رہے تھے کہ انہوں نے کنسرٹ کے دوران قومی پرچم تھامنے سے انکار کیا اور قومی ترانوں کے بجائے انڈین گانا گانے کو فوقیت دی۔

قومی پرچم نہ تھامنے کی خبروں پر تا حال کوئی ثبوت سامنے نہیں آیا تاہم  پاکستان کے یومِ آزادی کے حوالے سے منعقدہ کنسرٹ میں ایک ہندوستانی گانا گا نا عاطف کے لے سر درد بنتا جا رہا ہے۔

عاطف کے حامیوں کا کہنا ہے کہ اس کنسرٹ میں پاکستانیوں کے علاوہ بنگالی اور ہندوستانی بھی شامل تھے، سب ہی عاطف کی پرفارمنس سے خوب لطف اندوز ہوئے، ایک ٹوئٹر صارف کا یہ بھی کہنا تھا کہ کسی کنسرٹ میں اپنا ہی گانا گانا کسی بھی انداز میں عاطف کی حب الوطنی پر سوال نہیں اٹھاتا۔

مشہور گلوکار شفقت امانت علی بھی اس حوالے سے عاطف کے دفاع میں سامنے آ گئے ہیں، ان کا کہنا تھا کہ موسیقی کی سرحدیں نہیں ہوتیں، موسیقی کو پاکستانی یا ہندوستانی کہہ کر تقسیم نہیں کیا جا سکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ ایک موسیقار کی پہچان اس کے گائے  ہوئے گانوں سے ہوتی ہے، عاطف نے کنسرٹ میں اپنا ہی گایا ہوا گانا پیش کرکے کوئی غلط کام نہیں کیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز