منشیات کے30 اڈے بند کرائیں، ڈاکٹر امیر شیخ کا خط

October 11, 2018

کراچی: ایڈیشنل آئی جی ڈاکٹر امیر شیخ نے اسٹریٹ کرائمز کی بڑی وجہ منشیات کے کاروبار کو قرار دیتے ہوئے احکامات جاری کیے ہیں کہ شہر قائد میں قائم منشیات فروشی کے 30 بڑے اڈے فوری طور پر بند کرائے جائیں۔

ہم نیوز کے مطابق کراچی پولیس کے سربراہ نے یہ احکامات تینوں رونز کے ڈی آئی جیز کو بھیجے گئے خط میں دیے ہیں۔ انہوں نے شہر کے 30 بڑے اڈوں کی فہرست بھی جاری کی ہے۔

ڈاکٹر امیر شیخ نے لکھا ہے کہ جرائم پیشہ افراد اور منشیات فروشوں کے درمیان گہرا گٹھ جوڑ سامنے آیا ہے اور ہر جرم کے پیچھے منشیات کا استعمال پایا گیا ہے۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی نے خط میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ یونیورسٹیوں، کالجوں اور دیگر تعلیمی اداروں میں طلبا و طالبات بھی منشیات استعمال کر رہے ہیں۔

ڈاکٹر امیر شیخ کا کہنا ہے کہ منشیات معاشرے اور خاص طور پر نوجوان نسل کو تباہ کر رہی ہے۔

منشیات کے بڑے اڈوں کی فہرست میں محمودآباد کےعلاقے چنیسر گوٹھ میں منشیات کا بڑا اڈا سرفہرست ہے اور فہرست میں شیریں جناح کالونی کے اڈے کو دوسرا نمبر دیا گیا ہے۔

ایڈیشنل آئی جی ڈاکٹر امیر شیخ کے خط کے مطابق سول لائنز میں ہجرت کالونی، کلاکوٹ لیاری میں بہار کالونی اور ابراہیم حیدری کی ریڑھی گوٹھ میں منشیات کے اڈے سرعام منشیات فروشی میں ملوث ہیں۔

ناظم آباد میں سیف اللہ کا اڈہ، شاہراہ نور جہاں میں کوئلہ کڑاہی اور ڈی سلوا ٹاؤن کا اڈہ بھی لسٹ میں شامل ہیں۔

جمشید کوارٹر میں لسبیلہ، لانڈھی میں مسلم آباد، ملیر سٹی میں منا بروہی اور قائد آباد میں منشیات کے بڑے اڈے بھی لسٹ میں شامل پائے گئے ہیں۔

اڈوں کی فہرست کے مطابق سچل کے علاقے میں محکمہ موسمیات کے قریب بلاول گوٹھ اور پاک کالونی میں بھی منشیات فروشی کے مراکز ہیں۔

منگھوپیر کے علاقے پختون آباد، عزیز بھٹی کے علاقے شانتی نگر اور ڈالمیا میں کالو کرنٹ کا منشیات کے اڈے کی بھی نشاندہی کی گئی ہے۔

ڈاکٹرامیر شیخ کی جاری کردہ فہرست کے مطابق پی آئی بی کالونی میں عیسیٰ نگری اور سبزی منڈی کے قریب مینا کا منشیات کا اڈہ اور کورنگی میں زمان ٹاؤن میں منشیات فروشی کا کاروبار عروج پر ہے۔

فریئر اور ڈیفنس تھانوں کی حدود میں واقع کالاپل ریلوے کالونی کو بھی منشیات فروشی کا اہم مرکز قرار دیا گیا ہے۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بلوچ کالونی کے علاقے میں جونیجو ٹاؤن اور اعظم بستی جب کہ ملیر کینٹ میں ذکریا گوٹھ منشیات کے گڑھ ہیں۔

رپورٹ میں گلشن معمار اور سائٹ سپر ہائی وے کے علاقے دوست محمد جنجال گوٹھ میں بھی منشیات فروشی کا انکشاف کیا گیا ہے۔

کراچی پولیس کے سربراہ کے مطابق ڈاکس کی حدود میں واقع مچھرکالونی، پیر آباد کے علاقے قصبہ کالونی اور مدینہ کالونی کے علاقے اتحاد ٹاؤن میں بھی منشیات فروشوں کا راج موجود ہے۔

رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ شرافی گوٹھ خلدآباد، ملیر کے علاقے سعود آباد، مومن آباد، الآصف اسکوائر اور سہراب گوٹھ کے علاقے لاسی گوٹھ منشیات فروشوں کے گڑھ بن چکے ہیں۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر شیخ کا ڈی آئی جیز کو خط میں کہنا ہے کہ تمام اڈے فوری طور پر بند کرا کر پولیس کو بدنامی سے بچایا جائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز