شہبازشریف کی ضمانت کی درخواست سماعت کے لیے مقرر

نیب کے تلخ سوالات پر شہباز شریف کی کھلی دھمکیاں

فوٹو: فائل

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے قائد حزب اختلاف قومی اسمبلی شہباز شریف کی ضمانت کیلئے دائر درخواست سماعت کیلئے مقرر کردی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ کا دو رکنی بینچ جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں معاملے کی سماعت کرے گا۔

اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ نے لائرز فاؤنڈیشن کی طرف سے درخواست دائر کی ہے جس میں اجمل میاں اور جسٹس حمود الرحمن کے فیصلوں کے حوالے دیئے گئے ہیں۔

درخواست گزار نے مؤقف اپنایا ہے کہ شہبازشریف کو آشیانہ ہاؤسنگ کیس میں انکوائری مکمل ہونے اور جرم ثابت ہونے سے پہلے گرفتار کیا گیا جو آئین کے آرٹیکل 10 کی خلاف ورزی ہے۔ آرٹیکل 10 کے تحت شفاف اور منصفانہ ٹرائل ہر ملزم کا بنیادی حق ہے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین نیب نے شہباز شریف کو کیس میں شفاف اور منصفانہ کا حق نہیں دیا ، دوران انکوائری کسی بھی ملزم کو گرفتار کرنے کا اختیار آئین سے متصادم ہے۔

عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب کی گرفتاری کالعدم قرار دی جائے اور ضمانت منظور کر کے رہائی کا حکم دیا جائے۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے پانچ اکتوبر کو آشیانہ اسکینڈل کیس میں شہباز شریف کو گرفتار کیا تھا۔ احتساب عدالت نے 16 اکتوبر کو شہباز شریف کے جسمانی ریمانڈ میں 14 دن کی مزید توسیع کی تھی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز